Saturday , September 22 2018
Home / شہر کی خبریں / بیرونی کمپنیوں کی سرمایہ کاری ، تلنگانہ اور آندھراپردیش کے درمیان مسابقت

بیرونی کمپنیوں کی سرمایہ کاری ، تلنگانہ اور آندھراپردیش کے درمیان مسابقت

آندھرا کو کسی قدر کامیابی، تلنگانہ حصول پراجکٹ سے محروم، سرمایہ داروں کی تلنگانہ سے عدم دلچسپی

آندھرا کو کسی قدر کامیابی، تلنگانہ حصول پراجکٹ سے محروم، سرمایہ داروں کی تلنگانہ سے عدم دلچسپی
حیدرآباد 23 اپریل (سیاست نیوز) ریاست آندھراپردیش کی تقسیم کے بعد دونوں ریاستوں آندھراپردیش و تلنگانہ میں بیرونی کمپنیوں کی سرمایہ کاری حاصل کرنے میں مسابقت کا سلسلہ جاری ہے۔ دونوں ریاستیں اِس بات کے لئے کوشاں ہیں کہ بیرونی سرمایہ کاری زیادہ سے زیادہ اُنھیں حاصل ہوں۔ دونوں ریاستوں کے وزراء بیرونی سرمایہ کاروں کو راغب کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ اِن کوششوں میں کچھ حد تک ریاست آندھراپردیش کو کچھ حد تک کامیابی حاصل ہورہی ہے جبکہ ریاست تلنگانہ کو تاحال کوئی ایسا بڑا پراجکٹ نہیں ملا ہے جس سے ریاست کی معاشی ابتری کو فوری طور پر دور کرتے ہوئے عالمی سطح کے سرمایہ کاروں کو راغب کروایا جاسکے۔ ریاست آندھراپردیش میں نئے صدر مقام کی تعمیر کے سبب عالمی سطح کی کمپنیاں اُن علاقوں کو ترجیح دے رہی ہیں تاکہ مستقبل میں سرمایہ کاری سے بہتر فوائد حاصل ہوسکیں۔ ریاست تلنگانہ میں حیدرآباد جہاں بنیادی سہولتوں سے آراستہ اور ہر طرح کی عصری سہولتیں موجود ہیں اِس کے باوجود بھی سرمایہ کاروں کی توجہ حیدرآباد کی جانب مبذول نہیں ہورہی ہیں جس کی بنیادی وجہ یہ تصور کی جارہی ہے کہ ریاست تلنگانہ میں سرمایہ کاروں کے مفادات کے تحفظ کے متعلق کوئی منصوبہ حکومت کے پاس نہیں ہے لیکن حکومت کی جانب سے یہ دعوے کئے جارہے ہیں کہ حکومت سرمایہ کاروں و صنعت کاروں کو بہتر سے بہتر سہولتوں کی فراہمی کے علاوہ اُن کی درخواستوں کو سنگل ونڈو کے ذریعہ حل کرنے کے اقدامات کررہی ہے اور اِس سلسلہ میں ریاست تلنگانہ پہلی ریاست ہے جو منصوبہ تیار کرتے ہوئے صنعتکاروں کے لئے علیحدہ پالیسی روشناس کرواچکی ہے۔ چیف منسٹر آندھراپردیش مسٹر این چندرابابو نائیڈو اپنے سابقہ تجربات اور روابط کا استعمال کرتے ہوئے ریاست آندھراپردیش کے نئے صدر مقام کے لئے زیادہ سے زیادہ سرمایہ کاری حاصل کرنے میں کامیاب ہوتے جارہے ہیں اور اِس سلسلہ میں اُنھوں نے جو اعلانات کئے ہیں اُنھیں قابل عمل بنانے کے لئے چین، سنگاپور کے علاوہ بعض دیگر ممالک کا دورہ کرتے ہوئے سرمایہ کاروں کی توجہ نوتشکیل شدہ ریاست کی جانب مبذول کروائی ہے۔ لیکن چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے چندرشیکھر راؤ اور اُن کی کابینہ کی جانب سے متعدد مرتبہ سرمایہ کاروں اور صنعت کاروں کو راغب کروانے کے لئے اعلانات کررہے ہیں اور پالیسیوں کو مثبت قرار دے رہے ہیں لیکن سرمایہ کاروں کی دلچسپی آندھراپردیش کی جانب بڑھتی جارہی ہے۔ والمارٹ انٹرنیشنل نے ریاست تلنگانہ میں 4 تا 5 سوپر مارکٹس شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے لیکن جو کمپنیاں تلنگانہ میں سرمایہ کاری کررہی ہیں اُن کی دلچسپی آندھراپردیش میں بھی نظر آرہی ہے جبکہ آندھراپردیش کی جانب راغب ہونے والی کمپنیوں کا رجحان تلنگانہ میں نظر نہیں آرہا ہے۔ گزشتہ دنوں والمارٹ انٹرنیشنل کے عہدیداروں نے چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے چندرشیکھر راؤ سے ملاقات کرتے ہوئے ریاست میں سرمایہ کاری کے منصوبہ سے واقف کروایا اور کہاکہ حیدرآباد کے نواحی علاقوں میں کھیتی کرنے والے کاشتکاروں کی جانب سے بہترین ترکاریاں و پھل کی پیداوار کی جارہی ہے۔ والمارٹ اِن اشیاء کو سوپر مارکٹ کے ذریعہ فروخت کرنے کا منصوبہ رکھتا ہے۔

TOPPOPULARRECENT