Sunday , October 21 2018
Home / Top Stories / بیرون ممالک میں مقیم ہندوستانیوں کیلئے شادیوں کا مسئلہ نہایت سنگین

بیرون ممالک میں مقیم ہندوستانیوں کیلئے شادیوں کا مسئلہ نہایت سنگین

اسراف اور مطالبات کی لعنت سے بچنے کی تلقین‘ دوبدو ملاقات پروگرام سے جناب زاہد علی خان اور دیگر کاخطاب

حیدرآباد۔ 22؍ اپریل ( سیاست نیوز) جناب زاہد علی خان نے کہا کہ ملک اور بیرون ممالک کی صورت حال گھناونی صورت اختیار کرچکی ہے۔ ہندوستانی مسلمانوں کی بڑی تعداد آج خلیجی ممالک ‘ امریکہ ‘کینڈا اور جاپان میں روزگار کے حصول کے لئے مقیم ہیں مگر ان کے لڑکوں و لڑکیوں کے شادیوں کا مسئلہ بڑا گھمبیر صورتحال اختیار کرتے جا رہا ہے ۔ اس لئے بیرونی ممالک میں مقیم ہندوستانیوں نے سیاست اور ملت فنڈ کی اس تحریک پر کہ ’’شادی کو آسان بنایا جائے ‘‘ انہیں بھی یہ خواہش پید ا ہو رہی ہے کہ اس طرح کا دو بہ دو ملاقات پروگرام امریکہ اور خلیجی ممالک میں بھی رکھا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ سعودی حکومت تارکین وطن پر نت نئے پابندیوں کے عائد کرنے کی وجہ سے آج وہاں پر لوگ بڑے پریشان کن حالت سے زندگی گذار رہے ہیں ۔ ان خیالات کا اظہار جناب زاہد علی خان آج نیو اسٹار فنکشن ہال ’ روبرو کریسنٹ ہاسپٹل نزد سروجنی دیوی ہاسپٹل (مہدی پٹنم) پر 84 ویں دوبہ دو ملاقات پروگرام سے کیا ۔ شہ نشین پر جناب سید مرتضی افتخار مہدی مالک نیو اسٹار فنکشن ہال ‘ جناب محمد تاج الدین لوک ایوت ‘ علی الگتمی ‘ جناب الیاس پاشاہ ‘ میر انورالدین ‘ ڈاکٹر ناظم علی اور دوسرے موجود تھے ۔ قاری الیاس باشاہ کی قرات کلام پاک سے پروگرام کا آغاز ہوا ۔ جناب زاہد علی خان نے سلسلہ خطاب جاری رکھتے ہوئے کہا کہ سیاست اور ملت فنڈ کی جانب سے ہونے والے دو بہ دو ملاقات پروگرام آج عالمی شہرت اختیار کرچکا ہے ۔ اس کے باوجود شہر حیدرآباد کے ہر چھوٹے و بڑے محلوں میں یہ پروگرام منعقد کرنے کی سخت ضرورت محسوس کی جا رہی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ جو لوگ اپنے بال بچوں کو یہاں چھوڑ کر فکر معاش کے لئے بیرونی ممالک کا رخ کئے ہوئے ہیں ان کے دلوں سے پوچھیں کہ وہ کس محنت کے ساتھ اپنی پونجی کو جمع کر کے بھیج رہے ہیں ۔ اس لئے کیرالہ کے مسلمانوں نے ایک سنہرا پروگرام ترتیب دیا تاکہ معاشی موقف کو یہاں بھی مستحکم کیا جاسکے ۔ انہوں نے کہا کہ جب مسلمان شادیوں میں بے جا اسراف ‘ جہیز ‘ لین دین ‘ گھوڑے جوڑے و مطالبات کی لعنت سے اپنے آپ کو دور کھیں تو دنیا بھر میں ایک بڑی قوم و عزت سے جانے و پہنچانے جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ آج اقطاع عالم میں ایک گھناونی سازش کے تحت مسلمانوں کا خون خرابہ کیا جا رہا ہے اور اس طرح ہندوستان میں مسلمانوں کے بڑوں اور چھوٹے بچوں کے ساتھ بھی بھیانک جرائم اختیار کئے جا رہے ہیں ۔ انھوں نے کہا کہ سیاست کی یہ تحریک جو شادی کو آسان بنایا جائے اس کو ہر گھر کی دہلیز تک پہنچانے کی ضرورت ہے اور ایسے کارکنوں کی ضرورت ہے کہ جولوگوں کو ترغیب دی کہ وہ اسلامی طریقہ سے شادی بیاہ اور معاملات زندگی انجام دیں ۔ انہوں نے کہا کہ شادی ایک روایتی رسم ہے لیکن اس رسم سے پہلے اور شادی کے نام پر لوگ کروڑہا روپئے نام ونمود کے لئے بے دریغ خرچ کر رہے ہیں جو زوال کا سبب ایک دن بنے گا ۔ اس لئے ہم نے اللہ کا حکم اور رسولؐ کی اس سنت کو عین اللہ کے حکم اور سنت رسولؐ کے مطابق گذارنے کا فیصلہ ابھی تک کیا ہی نہیں ۔ ڈاکٹر سیادت علی نے کہاکہ مسلمان کو ایک بلند بانگ مقصد کے تحت اس دنیا میں بھیجا گیا لیکن انہوں نے اپنے اس مقصد سے روگردانی اختیار کی جس کی وجہ سے ہمارا حال ملک اور عالم میں جو ہو رہا ہے وہ ہر ایک کے سامنے عیاں ہے ۔

اس لئے مسلمان لینے والے کے بجائے دینے والے بنیں اور اسلام کی بھی یہی تعلیم ہے کہ لینے والے ہاتھ سے دینے والا ہاتھ افضل ہے ۔ کی اس کے ساتھ نیتوں کو پاک و صاف بنانے ضرورت ہے اور ساتھ ہی قرآن و حدیث کی روشنی میں رشتے کرنے والے بنیں ۔ اس دو بہ دو ملاقات پروگرام میں علحدہ علحدہ کاؤنٹرس قائم کئے گئے ۔ انجنیئرنگ کاؤنٹر جناب انورالدین ‘ زاہد فاروقی ‘ میڈیسن پر ڈاکٹر سیادت علی ‘ ڈاکٹر دردانہ ‘ اقراء ‘ پوسٹ گریجویٹ میں سید ناظم الدین ‘ ریاض النساء ‘ آمنہ فاطمہ ‘ گریجویٹ میں سید الیاس باشاہ ‘ ناظم علی ‘ محمدی ‘ مہر ‘ ایس ایس سی کاؤنٹر پر تسکین ‘ کوثر جہاں ‘ مہروز ‘ عقدثانی کاؤنٹر پر ثانیہ ‘ لطیف النساء ‘ صالحہ ‘ تاخیر سے شادی و معذورین کے کاؤنٹر پر شہانہ آن لائن رجسٹریشن کاؤنٹر پر محترمہ شمیم سلطانہ ۔ لڑکوں کے رجسٹریشن کاؤنٹر پر امتیاز ‘ ترنم خان ‘ افسر ‘ ریحانہ نواز ‘ لڑکوں کے رجسٹریشن کاؤنٹر پر رئیسہ اور قدیسہ ‘ شہناز فاطمہ اور دوسرے موجود تھے ۔ تیز دھوپ کے باوجود والدین اور سرپرستوں کی بڑی تعداد نے دو بہ دو ملاقات پروگرام میں شرکت کی اس طرح دوبہ دو ملاقات پروگرام میں 150 لڑکیوں کے اور 80 لڑکوں کے 80 بائیو ڈاٹاس رجسٹریشن ہوئے ۔ اس پروگرام میں ملک کی تمام ریاستوں کے اضلاع اور بیرونی ممالک میں مقیم حیدرآبادیوں کو راست ملاحظہ کے لئے دو بہ دو ملاقات کے آغاز سے اختتام تک سیاست کے فیس بک ‘ اسکائیپ ‘ یو ٹیوپ پر راست مشاہدہ کی سہولت مہیا کی گئی تھی ۔ جناب ظہیرالدین علی خان منیجنگ ایڈیٹر سیاست سے والدین اور سرپرستوں نے ملاقات کر کے مبارکباد دی ۔ اس کے علاوہ فرسٹ لانسر کے نوجوانوں جو اس پروگرام کو دیکھنے کے لئے شادی خانہ پہنچے انہوں نے بھی اس تحریک اور پروگرام کا خیرمقدم کیا ۔ جناب خالد محی الدین اسد کوارڈینیٹر نے والدین سرپرستوں کی رہبری و رہنمائی کی اور پروگرام کو کامیابی سے ہمکنار کر نے میںاپنا حصہ ادا کیا اور نیو اسٹار فنکشن ہال کے انتظامیہ اور دوسروں سے اظہار تشکر کیا ۔ جناب زاہد فاروقی نے کارروائی چلائی اور ابتداء میں تمام کا خیرمقدم کیا ۔
وقارآباد میں اراضی کا تنازعہ
مقامی ٹی آر ایس لیڈر کا قتل
حیدرآباد۔ /22 اپریل (سیاست نیوز) اراضی تنازعہ کے نتیجہ میں وقار آباد علاقہ میں ایک شخص کا قتل کردیا گیا ہے ۔ بتایا جاتا ہے کہ مقامی ٹی آر ایس لیڈر 38 سالہ پی سرینواس کو اسی علاقے کے ساکن داسو ، رتنم ، پرشانت اور ارون ساکن میلارم ویلیج نے سرینواس کے سر پر وزنی پتھر ڈالکر اس پر چاقو سے حملہ کرکے قتل کردیا ۔ پولیس وقار آباد رورل نے قتل کیس سے متعلق ایک مقدمہ درج کرلیا اور تحقیقات جاری ہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT