Monday , December 11 2017
Home / شہر کی خبریں / بیشتر اقامتی اسکولس بنیادی سہولتوں سے محروم

بیشتر اقامتی اسکولس بنیادی سہولتوں سے محروم

حکام مسائل کی یکسوئی سے قاصر ، بچوں کی فرش پر شب بسری ، عہدیداران خواب غفلت میں
حیدرآباد ۔ 3۔ اگست (سیاست  نیوز) تلنگانہ میں اقلیتوں کیلئے قائم کردہ 71 اقامتی مدارس کے آغاز کو تقریباً ایک ماہ مکمل ہوچکا ہے لیکن آج تک بھی بیشتر مدارس بنیادی سہولتوں سے محروم ہیں اور حکام مسائل کی یکسوئی سے قاصر دکھائی دے رہے ہیں۔ اسکولوں کی نگرانی کرنے والے سوسائٹی میں بڑے پیمانہ پر تقررات کئے گئے ہیں لیکن مذکورہ عہدیدار اسکولوں کے مسائل کی یکسوئی پر توجہ دینے کے بجائے سوسائٹی کے دفتر سے کام کر رہے ہیں۔ حیدرآباد اور اضلاع سے مسلسل شکایت مل رہی ہے کہ اسکولوں میں آج تک بھی بنیادی انفراسٹرکچر فراہم نہیں کیا گیا۔ طلبہ کے بیڈ، فرنیچر کے علاوہ دیگر سہولتیں فراہم نہیں کی گئیں۔ کئی اسکولوں میں طلبہ زمین پر بیٹھنے پر مجبور ہیں۔ اس کے علاوہ کتابیں بھی فراہم نہیں کی گئیں۔ بعض اسکولوں میں طلبہ کو رات میں فرش پر سونا پڑ رہا ہے ۔ حکومت نے اگرچہ ہر اسکول میں کارپوریٹ طرز کی سہولتیں فراہم کرنے کا اعلان کیا تھا لیکن اسکولوں کے آغاز کے بعد یہ دعوے کھوکھلے ثابت ہوئے۔ دلچسپ بات تو یہ ہے کہ ایک معیاری پرنسپلس اور اساتذہ کے تقررات کے سبب طلبہ کو کئی مسائل کا سامنا ہے۔ حکام کی لاپرواہی کے سبب کئی سرپرستوں نے اپنے بچوں کو گھر واپس طلب کرلیا ہے کیونکہ اعلان کے مطابق معیاری تعلیم فراہم کرنے میں سوسائٹی ناکام ہوچکی ہے۔ اسکولوں کے آغاز کے وقت اقلیتی اداروں عہدیداروں کو اسٹیٹ آفیسرس کے طور پر مقرر کیا گیا تھا اور انہیں دو دو اضلاع کی ذمہ داری دی گئی تھی لیکن اسکولوں کے آغاز کے ساتھ ہی ان کا رول ختم کردیا گیا۔ بتایا جاتا ہے کہ اضلاع سے ابھی بھی عہدیدار اور اولیائے طلبہ اسٹیٹ آفیسرس سے ربط قائم کرتے ہوئے سہولتوں کی کمی کی شکایات کر رہے ہیں۔ اسٹیٹ آفیسرس نے سوسائٹی کو سہولتوں کی کمی کے بارے میں پہلے ہی رپورٹ پیش کردی لیکن ایک ماہ گزرنے کے باوجود سوسائٹی نے کوئی توجہ نہیں دی۔ بتایا جاتا ہے کہ اسکولوں میں صحت و صفائی کے انتظامات بھی ناقص ہیں اور غیر معیاری کھانا سربراہ کیا جارہا ہے ۔ بعض اسکولوں میں علحدہ کچن کی سہولت نہیں ہے اور باتھ روم کے قریب پکوان کا انتظام کیا گیا۔ اولیائے طلبہ نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ فوری بنیادی سہولتوںکی فراہمی پر توجہ مرکوز کریں۔ حکومت کی جانب سے اسکول سوسائٹی میں بعض رضاکارانہ تنظیموں کے نمائندوں اور کئی ریٹائرڈ افراد کی خدمات حاصل کی ہیں۔ انہیں چاہئے کہ وہ ہر اسکول کا معائنہ کرتے ہوئے سہولتوں کا جائزہ لیں۔ اس کے علاوہ تعلیم کے معیار پر بھی توجہ کی ضرورت ہے۔

TOPPOPULARRECENT