Sunday , December 17 2017
Home / ہندوستان / بیف کھانے والوں کو ہلاک کرنا وحشیانہ جرم : تسلیمہ نسرین

بیف کھانے والوں کو ہلاک کرنا وحشیانہ جرم : تسلیمہ نسرین

تھرواننتاپورم ۔ /14 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) بنگلہ دیش مصنفہ تسلیمہ نسرین نے اپنے اس احساس کا اظہار کیا کہ بیف کھانے والوں کو ہلاک کرنا عدم رواداری ہی نہیں بلکہ ایک وحشیانہ جرم ہے اور اس کو روکا جانا چاہئیے ۔ تسلیمہ نسرین نے کہا کہ ’’ایسا نہیں ہے کہ ہندوستان میں اچانک ہی عدم رواداری شروع نہیں ہوئی … ہندوستان بحیثیت ایک ملک عدم رواداری نہیں ہے ۔ کیونکہ ہندوستان کا دستور اور قوانین عدم رواداری کی حمایت نہیں کرتے لیکن ہر جگہ عدم روادار لوگ رہتے ہیں … تاہم سخت قوانین کے سبب عدم رواداری پر عمل نہیں کرسکتے ۔ یہاں پر کئی سیکولر افراد نے عدم رواداری کے خلاف احتجاج کیا تھا ۔ یہ ایک اچھی علامت ہے ‘‘ ۔ تسلیمہ نسرین نے کوزی کوڈ میں منعقدہ ایک ادبی میلہ میں شرکت کے موقع پر ایک ملیالم ٹیلی ویژن چیانل سے بات چیت کے دوران اس احساس کا اظہار کیا ۔ اس سوال پر کہ آیا ایک ایسے وقت جب نریندر مودی وزارت عظمی پر فائز ہیں ۔ آیا وہ ہندوستان کی شہری بننا چاہتی ہیں ۔ انہوں نے جواب دیا کہ وہ محسوس کرتی ہیں کہ ہندوستان حکومت غیر جانبدار ہے ۔ تسلیمہ نے کہا کہ حکومت کی جانب سے مستقل قیام کی اجازت پر انہیں خوشی ہوئی ۔ حکومت نے پاکستانی گلوکار عدنان سمیع کو ہندوستانی شہریت دی ہے جو ایک اچھی علامت ہے ۔ بنگالی مصنفہ نے ماضی میں بی جے پی کے بزرگ لیڈر ایل کے اڈوانی کے دورہ پاکستان کا تذکرہ کرتے ہوئے دعوی کیا کہ وہ (اڈوانی) سیکولر اور ایک اچھے آدمی بن گئے ہیں ۔ کئی لوگ ہندوستان سے محبت کرتے ہیں ۔
تمام افراد ہندوستان کے مخالف یا ہندو دھرم یا بنیاد پرستی کے مخالف نہیں ہوتے ۔

TOPPOPULARRECENT