Tuesday , November 21 2017
Home / جرائم و حادثات / بینک مینیجر پر فائرنگ و رہزنی کی کوشش ‘ 3 ملزمین گرفتار

بینک مینیجر پر فائرنگ و رہزنی کی کوشش ‘ 3 ملزمین گرفتار

مکان سے نقد رقم لوٹنے کا بھی منصوبہ تھا ۔ کمشنر پولیس ایم مہیندر ریڈی کی پریس کانفرنس

حیدرآباد ۔ /25 ڈسمبر (سیاست نیوز) بینک منیجر کا دن دھاڑے فائرنگ کرنے اور رہزنی کی ناکام کوشش میں ملوث تین ملزمین کو کمشنر ٹاسک فورس نے گرفتار کرنے میں کامیابی حاصل کرلی ۔ کمشنر پولیس حیدرآباد مسٹر ایم مہیندر ریڈی نے ایک پریس کانفرنس میں بتایا کہ ضلع نیلور سے تعلق رکھنے والا شیخ عبدالرحیم نے کے بی ایس بینک مادھا پور کے چیف ایکزیکٹیو آفیسر من متھ دلائی پر فائرنگ کی تھی اور وہ منیجر کے مکان سے نقد رقم لوٹنے کا منصوبہ رکھتا تھا ۔ انہوں نے بتایا کہ پولیس نے مقام واردات کے قریب اور دیگر مقامات پر نصب سی سی ٹی وی کیمروں اور انتہائی عصری ٹکنالوجی کی مدد سے ملزمین کی نشاندہی کرکے انہیں گرفتار کرلیا ۔ مسٹر مہیند ریڈی نے بتایا کہ شیخ عبدالرحیم سابق میں امیرپیٹ میں واقع ایک ٹفن سنٹر میں ملازمت کیا کرتا تھا جہاں پر اس کی ملاقات پی نریش سے ہوئی اور اس نے رحیم کو مختلف ٹفن سنٹرس میں ملازمت فراہم کروائی تھی ۔ اسی دوران سمہاپوری ہوٹل میں  اس کی دوستی ایم وینکٹ رتنم سے ہوئی ۔ ڈسمبر 2015 میں نریش نے اپنا ذاتی ٹی اسٹال جگت گری گٹہ میں کھولا تھا اور کاروبار کے سلسلے میں اس نے کے بی ایس بینک مادھا پور برانچ میں ایک کھاتہ کھولا ۔ وینکٹ رتنم کا کویالا گوڑم مغربی گوداوری میں اس نے 20 لاکھ روپئے قرض پر حاصل کئے تھے لیکن ان سے جھگڑے کے بعد اپنے حریف سرینواس اور نائیڈو کو ختم کرنے کی غرض سے دونوں نے بندوق خریدنے کا ارادہ کیا ۔ شیخ عبدالرحیم اکثر انٹرنیٹ پر مختلف سیرئیلس دیکھا کرتا تھا جس کے دوران اسے یہ معلوم ہوا کہ بہار کے مونگیر علاقہ میں کم دام میں دیسی ساختہ پستول دستیاب ہوتی ہیں ۔ رحیم اور وینکٹ رتنم نے نومبر میں بہار پہونچ کر دیسی ساختہ پستول اور 40 کارتوس خریدے ۔ ڈسمبر کے پہلے ہفتہ میں رحیم پستول کے ساتھ اپنے دوست نریش کے مکان واقع گچی باؤلی پہونچا جہاں پر وینکٹ رتنم نے امیر پیٹ علاقہ میں مقیم تاجر پیشہ ضعیف رشتہ داروں کو لوٹنے کا منصوبہ تیار کیا لیکن وہ ناکام رہے ۔ /17 ڈسمبر کو رحیم اور نریش کے وی ایس بینک مادھاپور پہونچ کر 2000 روپئے کی رقم حاصل کرنے کی کوشش کی لیکن بینک منیجر من متھ دلائی نے پیان کارڈ کی کاپی فراہم نہ کرنے پر رقم دینے سے انکار کردیا ۔ لیکن نریش نے اپنے ایک قریبی رشتہ دار جو سابق میں بینک منیجر کا ڈرائیور ہوتا تھا کا حوالہ دیا اور رقم حاصل کرلی ۔ بینک منیجر کے مکان میں نئے کرنسی نوٹس کی موجودگی کا اندازہ لگاتے ہوئے شیخ عبدالرحیم نے اپنے دیگر مذکورہ ساتھیوں کے ہمراہ شانتی نگر میں واقع بینک منیجر کے درگا کنوملی اپارٹمنٹ پہونچ کر واچ مین سے منیجر کے فلیٹ کا پتہ لگایا ۔ کمشنر پولیس نے بتایا کہ /18 ڈسمبر کو رحیم نے خود کو کرائم برانچ عہدیدار ظاہر کرکے بینک منیجر کے مکان میں داخل ہونے کی کوشش کی لیکن شناختی کارڈ طلب کرنے پر اس نے من متھ دلائی پر فائرنگ کردی اور فرار ہوگیا ۔ انہوں نے بتایا کہ واردات کے بعد تین ریاستوں میں گھومتے ہوئے پولیس کو چکمہ دے رہا تھا لیکن ٹاسک فورس نے اسے گرفتار کرلیا اور ملزمین کے قبضے سے دیسی ساختہ پستول ، 12 کارتوس اور دیگر اشیاء برآمد کرلیا ۔ ایک اور ملزم وینکٹ رتنم ہنوز فرار ہے ۔

TOPPOPULARRECENT