Tuesday , September 25 2018
Home / ہندوستان / بینک کی غلطیوں کا خمیازہ عام شہری اٹھاتے ہیں: کووند

بینک کی غلطیوں کا خمیازہ عام شہری اٹھاتے ہیں: کووند

نئی دہلی ۔5 اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) صدر جمہوریہ ہند رام ناتھ کووندنے بینک سیکٹر میں قرض فراہمی ‘ این پی اے اور اس میں ہونیو الی دھاندلی پر کہا ہیکہ بینک سے لون لینے کے بعد دانستہ یا پھر مجرمانہ طور پر اس کی ادائیگی نہ کرناایمانداری سے ٹیکس کی ادائیگی کرنے والے شہریوں کو مشکلات سے دوچار کرتاہے ۔ قابل ذکر ہیکہ حقیقت رکھنے کے باوجود عوامی بینکوں سے قرض لیکر ادائیگی نہ کرنے والے دانستہ وعدہ شکنوں کی تعداد ڈسمبر کے آخر تک 9,063 سے زائد ہوچکی ہے اور اس ضمن میں ان افراد کے ذمہ جنہوں نے عوامی بینکوں سے قرض لیکر ابھی تک ادائیگی نہیں کی ہے اس کی مجموعی رقم 1,10,050 کروڑ بتائی جاتی ہے ۔ پھکیلیڈیز آرگنائزیشن کے سالانہ اجلاس میں مہمان خصوصی کی حیثیت سے صدر جمہوریہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ تجارت میں نقصانات کے پورے اندیشے اور اس میں پیسہ ڈوب سکتا ہے لیکن اگر دانستہ طور پر بینکوں سے لئے گئے قرضوں کی ادائیگی نہ کرنے کا اثر ہندوستان کے عام شہریوں پر پڑتا ہے ۔ معصوم شہری اس کا نقصان اٹھاتے ہیں اور ایماندری سے ٹیکس ادا کرنے والے شہری ان کے بوجھ کو بھی برداشت کرتے ہیں ۔ واضح رہے کہ گذشتہ مہینہ وزارت خزانہ نے پارلیمنٹ کو اطلاع دیتے ہوئے کہا تھا کہ غیر مناسب قرضوں کی عوامی بینکوں میں فراہمی دن بہ دن بڑھتی جارہی ہے اور یہ گذشتہ 8 سالوں میں سب سے زیادہ ہے نیز ریاستی بینکوں میں یہ 777لاکھ کروڑ سے بھی زیادہ ہوچکا ہے۔ یہ اعداد و شمار ڈسمبر 2017ء کے آخر تک کے ہیں ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT