Sunday , September 23 2018
Home / ہندوستان / بیوہ سے شادی پر مفت ہنی مون کی پیشکش

بیوہ سے شادی پر مفت ہنی مون کی پیشکش

رائے پور 11 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) بیواؤں میں کھویا ہوا اعتماد بحال کرنے ایک تنظیم نیچرس کیر اینڈ سوشیل ویلفیر سوسائٹی نے چھتیس گڑھ میں ان افراد کو اعزاز و مراعات دینے کا فیصلہ کیا ہے جو بیوہ عورتوں سے شادی کریں گے۔ اس تنظیم نے ایسے جوڑوں کو ہنی مون کے لئے مفت اور تفریح کی پیشکش بھی کی ہے۔ اس تنظیم نے رائے پور میں منعقدہ ایک تقریب میں اع

رائے پور 11 مارچ (سیاست ڈاٹ کام) بیواؤں میں کھویا ہوا اعتماد بحال کرنے ایک تنظیم نیچرس کیر اینڈ سوشیل ویلفیر سوسائٹی نے چھتیس گڑھ میں ان افراد کو اعزاز و مراعات دینے کا فیصلہ کیا ہے جو بیوہ عورتوں سے شادی کریں گے۔ اس تنظیم نے ایسے جوڑوں کو ہنی مون کے لئے مفت اور تفریح کی پیشکش بھی کی ہے۔ اس تنظیم نے رائے پور میں منعقدہ ایک تقریب میں اعلان کیاکہ بیوہ اور اس سے شادی کرنے والے مرد پر مشتمل جوڑوں کو تین رات اور چار دن کا مفت ہنی مون پیاکیج دیاجائے گا۔ ایسے ’’خوش نصیب‘‘ جوڑے ایشیائی ممالک کے 45 مشہور و معروف تفریحی مقامات میں سے کسی ایک مقام کو اپنی ہنی مون کے لئے منتخب کرسکتے ہیں۔

اس تنظیم کی ڈائرکٹر ڈاکٹر دینیتا پانڈے نے کہاکہ بیواؤں کو ان کا کھویا ہوا اعتماد، عزت و احترام واپس دلانے کیلئے یہ انوکھی مہم شروع کی جارہی ہے۔ 2 مئی کو اکشے ترتیا کے نشبھ موضع پر بیواؤں کی شادیوں کا اہتمام کیا جائے گا۔ڈاکٹر وینیتا نے کہاکہ چوبے کالونی کے مہاراشٹرا منڈل میں منعقدہ ایک تقریب میں شادیوں کے لئے 75 مرد اور 55 عورتوں کا انتخاب کیا گیا۔ جن میں چند عورتوں کو بچے بھی ہیں۔ اُنھوں نے مزید کہاکہ چھتیس گڑھ کے دارالحکومت رائے پور کے علاوہ مہاراشٹرا، اترپردیش، مدھیہ پردیش، گجرات، اڈیشہ اور ہریانہ سے تعلق رکھنے والے خواہشمند مرد اور خواتین نے اس تقریب میں شرکت کی۔ ڈاکٹر وینیتا پانڈے نے کہاکہ بیوہ اور اس سے شادی کرنے والے مرد پر مشتمل جوڑوں کو سرکاری ملازمت، گھر اور دیگر سہولتوں کی فراہمی کیلئے ریاستی حکومتوں سے درخواست کرنے کا فیصلہ بھی کیا گیا ہے۔

بیوہ خواتین بھی ہولی کھیلیں گی
لکھنؤ۔/11مارچ، ( سیاست ڈاٹ کام ) اس سال ہولی کا تہوار شاید ان ہندو بیوہ خواتین کیلئے مبارک ثابت ہوگا کیونکہ انہیں رنگوں یا گلال سے ہولی نہ کھیلنے کی برسو ں پرانی روایت کو ختم کیا جارہا ہے۔ جاریہ سال بیوہ خواتین رنگوں اور گلال سے ہولی کھیلیں گی جبکہ اب تک وہ ایک دوسرے پر پھولوں کی پنکھڑیاں پھینکتے ہوئے ہولی مناتی تھیں۔تقریبا ایک ہزار بیوہ خواتین 14مارچ کو میرا سہا بھاگنی سدن میں علامتی طور پر رنگوں اور گلال سے ہولی کھیلیں گی۔

TOPPOPULARRECENT