Saturday , November 25 2017
Home / شہر کی خبریں / بیویوں کے حقوق کی عدم ادائیگی پر زندگی میں تخلیاں

بیویوں کے حقوق کی عدم ادائیگی پر زندگی میں تخلیاں

یکساں سیول کوڈ ناقابل برداشت ، طلاق ، خلع و نفقہ و مظلوم خواتین پر سمینار ، مختلف شخصیتوں کا خطاب
حیدرآباد ۔ 18 ۔ جولائی : ( راست ) : اسلامی تعلیمات ناواقفیت و دین سے دوری کے سبب اکثر مسلم مرد ( شوہر ) اپنی اپنی بیویوں کے حقوق ادا نہ کرنے کے سبب ازدواجی زندگیوں میں تلخیاں پیدا ہورہی ہیں جس کے نتیجہ میں نوبت طلاق و خلع تک پہنچ رہی ہے ۔ان خیالات کا اظہار صدر آل انڈیا مسلم فرنٹ جناب محمد عثمان شہید ایڈوکیٹ نے اردو گھر مغل پورہ میں منعقدہ کانفرنس بعنوان ’ طلاق ، خلع و نفقہ و مظلوم خواتین ‘ میں کیا جس کا اہتمام آل انڈیا مسلم فرنٹ نے کیا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایسی مظلوم و بے سہارا خواتین جو ظالم و غیر ذمہ دار شوہر کی ستائی ہوئی ہیں ۔ اور اگر وہ قانونی امداد چاہتی ہیں تو وہ شہید ایجوکیشنل ویلفیر ٹرسٹ کی صدر نشین محترمہ مسرت جہاں شہید سے رجوع ہوں ۔ ایڈوکیٹ موصوف نے مزید کہا کہ چند ناعاقبت اندیش و مذہبی تعلیمات سے نابلد مرد حضرات ( شوہروں ) کی اپنے فرائض کی عدم ادائیگی کے سبب اسلام دشمن عناصر کے ساتھ ساتھ مرکزی حکومت و لاء کمیشن ’ یکساں سیول کوڈ ‘ کے نفاذ کے ذریعہ شریعت محمدی میں مداخلت کی راہیں ہموار کرنے کی کوششیں کررہے ہیں۔ جس کے لیے ہندوستانی مسلمان بالخصوص مسلم خواتین مسلم پرسنل لا میں کسی بھی قسم کی مداخلت کو برداشت نہیں کریں گے ۔ عثمان شہید ایڈوکیٹ نے حکومت ہند سے مطالبہ کیا کہ وہ ملک کے مسلمانوں کے مذہبی جذبات کو مجروح کرنے کے اقدامات سے اعتراض کرے اور یہ جان لے کر ہندوستانی مسلمان یکساں سیول کوڈ کو ہرگز ہرگز نہیں قبول کریں گے ۔ جناب محمد علاء الدین انصاری ایڈوکیٹ نائب صدر فرنٹ نے کہا کہ اگر زوجین اپنے ذمہ حقوق و فرائض کو ایمانداری سے ادا کریں تو ازدواجی زندگیوں میں جو تلخیاں پیدا ہورہی ہیں اس کا تدارک ہوسکتا ہے ۔ مولانا محمد رضی الدین مسعود نے قرآنی آیات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ خواتین ہو کہ مرد چھوٹی چھوٹی باتوں کو نظر انداز کریں ۔ محترمہ عقیلہ خاموشی رکن آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ نے کہا کہ ازدواجی زندگیوں میں اگر کامیابی حاصل کرنا ہو تو چاہئے کہ رسول ﷺ کی حیات طیبہ آپ کی ازواج مطہرات سے سلوک و معاملات و نیز خواتین بی بی فاطمۃ الزہراؓ و دیگر صاحبان کی زندگیوں کا مطالعہ کر کے ان کردار کو اپنے لیے نمونہ بنالیں۔ جناب محمد مشتاق ملک صدر تحریک مسلم شبان نے کہا کہ امت مسلمہ اپنی جانیں قربان کرنے کے لیے تیار رہے گی ۔ مگر شریعت محمدیؐ میں مداخلت کسی بھی صورت میں برداشت نہیں کریں گے ۔ جناب محمد کاظم نے کہا کہ مسلمان عملی میدان میں غیر اسلامی رسم و رواج کے خلاف جدوجہد کا آغاز کریں ۔ جناب سید محمود علی ، عرشیہ عامرہ خاتون نے بھی مخاطب کیا ۔ جناب غلام محمد جنرل سکریٹری فرنٹ نے تنظیم کی جانب سے عملی ادامات اور کارکردگی کو پیش کیا اور قرار داد منظور کروائی کہ آل انڈیا مسلم فرنٹ کا یہ اجلاس ملک کے موجودہ فرقہ وارانہ حالات جو سنگھ پریوار مرکزی حکومت کی چھتری تلے پیدا کررہی ہے اس کی سختی سے مذمت کرتا ہے ۔ یکساں سیول کوڈ ہمیں قابل قبول نہیں ہے ۔ غلام محمد کے شکریہ پر اجلاس اختتام کو پہنچا ۔ اجلاس میں بالخصوص ڈاکٹر اسد ، محمد خواجہ وغیرہ شریک تھے ۔۔

TOPPOPULARRECENT