Monday , September 24 2018
Home / شہر کی خبریں / بیگم پیٹ ایرپورٹ کی اراضی کے تحفظ پر زور

بیگم پیٹ ایرپورٹ کی اراضی کے تحفظ پر زور

حیدرآباد ۔ 18 مارچ (سیاست نیوز) تلنگانہ قانون ساز کونسل میں رکن کونسل مسٹر کے آر آموس نے بیگم پیٹ ایرپورٹ کی اراضی کے تحفظ کا مسئلہ اٹھاتے ہوئے حکومت تلنگانہ سے مطالبہ کیا کہ حکومت اس وسیع و عریض اور قیمتی اراضی کو فوری اپنی تحویل میں لینے کے اقدامات کرے۔ مسٹر آموس نے مباحث کے دوران بیگم پیٹ ایرپورٹ اراضی معاملہ پر خصوصی توجہ دہانی ک

حیدرآباد ۔ 18 مارچ (سیاست نیوز) تلنگانہ قانون ساز کونسل میں رکن کونسل مسٹر کے آر آموس نے بیگم پیٹ ایرپورٹ کی اراضی کے تحفظ کا مسئلہ اٹھاتے ہوئے حکومت تلنگانہ سے مطالبہ کیا کہ حکومت اس وسیع و عریض اور قیمتی اراضی کو فوری اپنی تحویل میں لینے کے اقدامات کرے۔ مسٹر آموس نے مباحث کے دوران بیگم پیٹ ایرپورٹ اراضی معاملہ پر خصوصی توجہ دہانی کے ذریعہ حکومت سے مطالبہ کیا کہ حکومت تلنگانہ اس معاملہ میں فوری حرکت میں آئے چونکہ دکن ایرویز حیدرآباد اسٹیٹ کی یہ اراضی انضمام حیدرآباد کے بعد سے مرکزی شہری ہوا بازی کے تحت ہے اور اب یہاں ایرپورٹ باقی نہ رہنے کے سبب 790 ایکڑ اراضی کو خطرات پیدا ہوچکے ہیں۔ واضح رہیکہ روزنامہ سیاست میں 16 مارچ پیر کو اس سلسلہ میں رپورٹ شائع کی گئی تھی اور بیگم پیٹ ایرپورٹ کی اراضی کے تحفظ اور مرکز سے واپس حاصل کرنے کے اقدامات کی جانب توجہ مبذول کروائی گئی تھی۔ روزنامہ سیاست میں شائع اس خبر میں اراضی کو درپیش خطرات کا بھی تذکرہ کیا گیا تھا۔ مسٹر کے آر آموس نے آج تلنگانہ قانون ساز کونسل میں اس مسئلہ کو زیربحث لاتے ہوئے ایوان کو اس بات سے واقف کروایا کہ مرکزی حکومت دکن ایرویز کی اس اراضی کو محکمہ دفاع یا کسی اور مرکزی محکمہ کو دینے کے اقدامات کررہی ہے۔ اسی لئے ریاستی حکومت کو چاہئے کہ وہ فوری حرکت میں آتے ہوئے بیگم پیٹ ایرپورٹ کی اراضی مرکز سے حاصل کرے۔ انہوں نے ایوان کو بتایا کہ مذکورہ جائیداد انتہائی قیمتی ہوچکی ہے۔ انہوں نے اس اراضی کی تخصیصی لاگت 30 ہزار کروڑ بتاتے ہوئے کہا کہ حکومت تلنگانہ فوری طور پر مرکزی حکومت سے مذاکرات کے ذریعہ دکن ایرویز کی اس وسیع اراضی کو حاصل کرنے کے اقدامات کرے چونکہ اس اراضی کے حصول سے تلنگانہ کو کروڑہا روپئے کی اراضی حاصل ہوجائے گی۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT