Thursday , December 13 2018

بی ایس پی ۔جے ڈی ایس اتحاد قابل مذاکرات حکمت عملی

راہول گاندھی کے ملک کا آئندہ وزیراعظم بننا ممکن ‘ کانگریس ایم پی راجیوگوڑا کا بیان
نئی دہلی ۔ 11فبروری ( سیاست ڈاٹ کام ) بی ایس پی اور جے ڈی ایس کے اتحاد پر کرناٹک اسمبلی انتخابات کیلئے بات چیت کی جاسکتی ہے ۔ کانگریس نے کہا کہ بہوجن سماج پارٹی کی صدر مایاوتی نے یو پی اسمبلی انتخابات میں ناکامی سے کوئی سبق نہیں سیکھا ہے ۔ کانگریس نے یہ بھی کہا کہ بی ایس پی اور جنتادل ( سیکولر) نے اعلان کیا تھا کہ وہ آئندہ کرناٹک انتخابات کیلئے ایک اتحاد قائم کررہے ہیں ۔ اس کی تسلسل 2019ء لوک سبھا انتخابات میں بھی جاری رہے گا ۔ انہوں نے کہا کہ بی ایس پی قائد ستیش چندر مشرا اور جے ڈی ایس کے دانی علی نے ایک مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وہ سمجھتے ہیں کہ مایاوتی اکثر سیاسی اقدامات کرتی ہیں ۔ان کا مقصد جے ڈی ایس کے ساتھ اتحاد قابل مذاکرات حکمت عملی ہے ۔ کانگریس قائد ایم وی راجیو گوڑا نے پی ٹی آئی سے بات چیت کرتے ہوئے اس کا انکشاف کیا ۔ راجیہ سبھا کے رکن پارلیمنٹ جن کا تعلق کرناٹک ہے کہا کہ ممتا بنرجی دو مرتبہ اس تجویز کی ہنسی اڑی چکی ہے ۔ انہوں نے اترپردیش میں ناکامی سے کوئی سبق نہیں سیکھا ہے ۔ کانگریس پورے صبر و تحمل کے ساتھ اپنی حکمت عملی کاتعین کرتی ہے ۔ اس کا مقصد بی جے پی کو ریاستی اسمبلی انتخابات میں کامیابی سے روکنا ہے ۔ مایاوتی 20فیصد ووٹ حاصل کرنے میں کامیاب ہوئیں ۔ حالانکہ ان کی پارٹی کو ریاست میں ایک بھی نشست حاصل نہیں ہوئی ۔ کانگریس نے کہا کہ اپوزیشن پارٹیاں متحد ہوسکتی ہیں اور صدر کانگریس راہول گاندھی کو بطور قائد 2019ء کے عام انتخابات کیلئے قبول کرسکتی ہیں ‘ جبکہ بی جے پی نے ان کے ایجنڈے کو فرقہ پرست قرار دیا ہے ۔ اس سوال پر کہ آئندہ وزیراعظم کے عہدہ کیلئے امیدوار کون ہوگا ۔ گوڑا نے کہا کہ غالباً کانگریس کا کوئی رکن ہی وزیراعظم کے عہدہ کا امیدوار ہوسکتا ہے ان کے خیال میں راہول گاندھی ہی آئندہ وزیراعظم ہوں گے ۔

TOPPOPULARRECENT