Sunday , June 24 2018
Home / سیاسیات / بی جے پی دفتر میں وزیر کے روبرو زہرپینے والا شخص فوت

بی جے پی دفتر میں وزیر کے روبرو زہرپینے والا شخص فوت

نوٹ بندی اور جی ایس ٹی سے نقصان پر انتہائی اقدام
دہرہ دون 9 جنوری (سیاست ڈاٹ کام) نوٹ بندی اور جی ایس ٹی کے سبب مبینہ نقصانات برداشت کرنے کے بعد گزشتہ اتوار کو اتراکھنڈ کے وزیر زراعت سبودھ اُنیال کے روبرو زہر پینے والا شخص دہرہ دون ہاسپٹل میں دوران علاج فوت ہوگیا۔ علاقہ کماؤن کے سب سے بڑے شہر ہلدوانی کے ساکن پرکاش پانڈے نے ہفتہ کو ریاستی دارالحکومت میں واقع بی جے پی ہیڈکوارٹرس پر منعقدہ جنتا دربار میں اُنیال کو اپنی مشکلات سے واقف کروایا تھا۔ پانڈے نے اس اجلاس میں ایک ٹرانسپورٹر کی حیثیت سے اپنا تعارف کروایا تھا۔ وزیر زراعت سے اُس نے کہا تھا کہ بڑی کرنسی نوٹوں کی منسوخی اور جی ایس ٹی پر عمل آوری سے اس کا کاروبار بُری طرح متاثر ہوا تھا جس کے بعد وہ اپنے قرض ادا کرنے کی جدوجہد کررہا ہے۔ پانڈے نے کہاکہ اب اُس کو زہر پینا پڑے گا کیوں کہ مکتوب کے ذریعہ اس مسئلہ پر وزیراعظم نریندر مودی، وزیر فینانس ارون جیٹلی اور بی جے پی کے صدر امیت شاہ کی توجہ مبذول کروانے کی تمام کوششیں ناکام ہوگئی ہیں۔ بی جے پی کے کارکنوں نے جب یہ محسوس کرلیا کہ ان کی پارٹی کے صدر دفتر میں وزیر زراعت کے روبرو پانڈے زہر پی چکا ہے، اُنھوں نے فی الفور اُس کو وزیر کی کار کے ذریعہ ڈون ہاسپٹل سے رجوع کیا گیا جہاں سے دہرہ دون کے میکس ہاسپٹل منتقل کیا گیا اور آئی سی میں دوران علاج وہ آج فوت ہوگیا۔ سابق چیف منسٹر ہریش راوت نے کہا ہے کہ ریاستی حکومت کے لئے یہ موت ایک شرمناک واقعہ ہے۔

TOPPOPULARRECENT