Tuesday , November 21 2017
Home / Top Stories / بی جے پی سے اتحاد ‘ والد کا فیصلہ میرے لئے ’ پتھر کی لکیر ‘

بی جے پی سے اتحاد ‘ والد کا فیصلہ میرے لئے ’ پتھر کی لکیر ‘

تشکیل حکومت کیلئے ’ اتحاد کے ایجنڈہ ‘ پر عمل لازمی : محبوبہ مفتی کا ورکرس سے خطاب
سرینگر 7 مارچ ( سیاست ڈاٹ کام ) بی جے پی کے ساتھ تشکیل حکومت کا اشارہ دیتے ہوئے پی ڈی پی کی سربراہ محبوبہ مفتی نے آج کہا کہ ان کے مرحوم والد مفتی محمد سعید نے بی جے پی کے ساتھ اتحاد کیا تھا اور یہ فیصلہ ان کی وصیت کے مترادف ہے جو ان کے بچے پورا کرینگے چاہے ایسا کرتے ہوئے وہ خود کیوں نہ ختم ہوجائیں۔ محبوبہ مفتی کو چیف منسٹر کی حیثیت سے مفتی سعید کی جانشین سمجھا جا رہا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی سے اتحاد کرنے ان کے والد کا فیصلہ پتھر کی لکیر تھا اور وہ اپنے والد کی بات کو پورا کرینگی ۔ ساتھ ہی انہوں نے واضح کیا کہ مرکز کی بی جے پی زیر قیادت حکومت کی جانب سے اتحاد کے ایجنڈہ پر عمل آوری میں پیشرفت جموںو کشمیر میں تشکیل حکومت کیلئے ضروری ہے ۔ ریاست میں 8 جنوری سے صدر راج نافذ ہے ۔ پی ڈی پی لیڈر نے کہا کہ وہ ایک چیز بالکل واضح کردینا چاہتی ہیں کہ بی جے پی سے اتحاد کا فیصلہ ان کے والد مفتی سعید نے کیا تھا اور وہ اس کا احترام کرتی ہیں۔ جب کوئی والد اپنے بچوں سے کوئی وصیت کرتا ہے تو یہ ان کی ذمہ داری ہے کہ اس وصیت کو پورا کریں چاہے ایسا کرتے ہوئے وہ خود کیوں نہ ختم ہوجائیں۔ انہوں نے کپوارہ میں پارٹی ورکرس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ان کیلئے ان کے والد کا فیصلہ پتھر کی لکیر ہے ۔ محبوبہ مفتی نے کہا کہ بی جے پی کے ساتھ مخلوط حکومت تشکیل دینے اور مرکز کی حکومت سے ہاتھ ملانے مفتی سعید کا فیصلہ جموں و کشمیر کے عوام کیلئے تھا تاکہ ریاست میں اتحاد و امن برقرار رکھا جاسکے اور ترقی کو یقینی بنایا جاسکے ۔ انہوں نے تاہم کہا کہ اس فیصلہ کا ایک اور پہلو یہ تھا کہ دونوں جماعتوں کے مابین طئے پائے اتحاد کے ایجنڈہ پر عمل آوری کے ذریعہ ریاست کے عوام کو فائدہ پہونچایا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ جس طرح مفتی سعید کا فیصلہ اہم ہے اسی طرح اتحاد کے ایجنڈہ پر عمل آوری بھی اہمیت کی حامل ہے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT