بی جے پی عوام کی توجہ ہٹانے نفرت پھیلانے میں مصروف

اب بی جے پی سے کسی چیز کی امید نہیں کی جاسکتی ۔ سماجوادی صدر اکھیلیش یادو کا بیان
لکھنو 17 نومبر ( سیاست ڈاٹ کام ) سماجوادی پارٹی صدر اکھیلیش یادو نے آج بی جے پی پر الزام عائد کیا کہ وہ نفرت پھیلانے کا کام کر رہی ہے اور اترپردیش میں شہری مجالس مقامی انتخابات میں عوام کی توجہ ہٹانے کیلئے اس طرح کی مہم چلا رہی ہے ۔ اسبق چیف منسٹر نے یوگی آدتیہ ناتھ حکومت پر بھی تنقید کی اور کہا کہ وہ آلو کے کسانوں کے تعلق سے لا پرواہی برت رہی ہے اور وہ گنے کے کاشتکاروں کو بقایہ جات کی ادائیگی کرنے سے بھی گریزاں ہے ۔ اکھیلیش یادو نے اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اب بی جے پی سے کسی چیز کی امید نہیں کی جانی چاہئے ۔ اس کا اصل مقصد یہی ہے کہ نفرت کس طرح پھیلائی جائے ۔ دوسروں کیلئے مسائل کس طرح پیدا کئے جائیں اور انہیں کس طرح رسوا کیا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ عوام کی توجہ ہٹانے کیلئے بی جے پی قائدین جھاڑو اٹھالیتے ہیں اور ماسک پہن لیتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اترپردیش میں ترقی کے فقدان کیلئے بی جے پی دوسروں کو ذمہ دار قرار دیتی ہے ۔ اب بی جے پی کی ہی اترپردیش میں حکومت ہے ۔ بیشتر بڑے شہروں میں بی جے پی کے مئیر ہیں لیکن گذشتہ 10 تا 15 دن سے کچرے کی صفائی تک نہیں ہوسکی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سوچھ بھارت مشن کے حصے کے طور پر صرف جھاڑو تھامنے کے علاوہ بی جے پی کی اور کوئی سمت نہیں رہ گئی ہے ۔ یہ واضح کرتے ہوئے کہ ان کی حکومت نے آگرہ ۔ لکھنو ایکسپریس وے کی تعمیر کا کام 23 مہینوں میں مکمل کیا تھا اکھیلیش یادو نے کہا کہ اب یہ موجودہ حکومت کی ذمہ داری ہے کہ وہ پوروانچل ایکسپریس وے تعمیر کرے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ موجودہ حکومت کی ذمہ داری ہے ۔ انہیں مرکز سے فنڈم بھی ملیں گے۔ نیتی آیوگ بھی ان سے تعاون کر رہا ہے ۔ بی جے پی قائدین کہتے ہیں کہ وہ وارناسی کو ایودھیا سے مربوط کرینگے لیکن سب سے پہلے انہیں کم از کم کام تو شروع کرنا چاہئے ۔ یادو نے کہا کہ اگر ایکسپریس وے اور ہول سیل بازار قائم کئے جاتے ہیں تو ریاست کو ترقی ہوگی اور کسانوں کو ان کی پیداوار کی اچھی قیمت حاصل ہوسکتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر معروف برانڈ کی ڈائریز قائم ہوتی ہیں تو اس سے دیہی معیشت میں بہتری پیدا ہوگی ۔ اگر لیپ ٹیپ تقسیم کئے جاتے ہیں تو ملک کو ڈیجیٹل انڈیا کے راستے پر آگے لیجایا جاسکتا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT