Monday , June 18 2018
Home / شہر کی خبریں / بی جے پی مسلم تحفظات کی مخالف: وینکیا نائیڈو

بی جے پی مسلم تحفظات کی مخالف: وینکیا نائیڈو

یو پی اے دور کے تمام گورنرس کو مستعفی ہونے کا مشورہ

یو پی اے دور کے تمام گورنرس کو مستعفی ہونے کا مشورہ
حیدرآباد 6 جولائی (سیاست نیوز) مرکزی وزیر شہری ترقیات مسٹر ایم وینکیا نائیڈو نے مسلم تحفظات کی مخالفت کرتے ہوئے یو پی اے حکومت کی جانب سے نامزد کردہ تمام گورنرس کو مستعفی ہوجانے کا مشورہ دیا۔ حیدرآباد میں بی جے پی کے ریاستی ہیڈکوارٹر پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر ایم وینکیا نائیڈو کانگریس اور ٹی آر ایس کے علاوہ دوسری سیاسی جماعتوں کا نام لئے بغیر کہاکہ بی جے پی مسلم تحفظات کے خلاف ہے۔ بی جے پی کا ماضی میں جو موقف تھا وہ اب بھی برقرار ہے۔ اس میں کوئی تبدیلی نہیںہے۔ انھوں نے سیاسی جماعتوں پر ووٹ بینک کی سیاست کرتے ہوئے صرف اقتدار کی لالچ میں مذہبی تحفظات کے مسئلہ کو اچھالنے کا الزام عائد کیا۔ واضح رہے کہ ریاست میں 4 فیصد مسلم تحفظات پر عمل آوری ہورہی ہے۔ کرناٹک میں مسلم تحفظات ہیں۔ چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے چندرشیکھر راؤ نے مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہم کرنے کا اعلان کیا ہے۔ مہاراشٹرا میں کانگریس اور این سی پی حکومت نے مسلمانوں کو 5 فیصد تحفظات فراہم کرنے کا کابینہ میں فیصلہ کیا ہے جس پر وینکیا نائیڈو نے ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ اب ووٹ بینک کی سیاست کا خاتمہ کرنے کا وقت آگیا ہے۔ بی جے پی نہ صرف مسلم تحفظات کی مخالفت کرے گی بلکہ اس کے خلاف چند سخت اقدامات بھی کرے گی۔ اُنھوں نے کہاکہ چند سیاسی جماعتیں مسلم ووٹ بینک کو مضبوط کرنے کیلئے اس طرح کے کھیل کھیل رہے ہیں۔ مرکزی وزیر شہری ترقیات و پارلیمانی اُمور نے کہاکہ ملک ترقی کی راہ سے بھٹک چکا ہے۔ دوبارہ ٹرین کو پٹری پر لانے کیلئے سخت اور ٹھوس اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔ وزیراعظم نریندر مودی کے زیرقیادت این ڈی اے حکومت ملک کے مفادات کے معاملہ میں کوئی سمجھوتہ نہیں کرے گی۔ غلط فیصلے کرتے ہوئے کانگریس کی زیرقیادت یو پی اے حکومت نے ملک کو کنگال بنادیا ہے۔ ترقی ٹھپ ہوکر رہ گئی ہے۔ کانگریس نے جو غلط فیصلے کئے تھے اس کے اثرات کی وجہ سے اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں بے تحاشہ اضافہ ہوگیا۔ پٹرولیم اشیاء کی قیمتیں بڑھ رہی ہیں۔ این ڈی اے حکومت اشیائے ضروریہ کی قیمتوں پر قابو پانے کیلئے بڑے پیمانے پر اقدامات کررہی ہے۔ پیاز اور آلو کی قیمتوں پر حکومت نے قابو پالیا گیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT