Monday , November 20 2017
Home / اضلاع کی خبریں / بی جے پی نے اپنے ہی دور میں ہوئی دھاندلی کو بے نقاب کیا

بی جے پی نے اپنے ہی دور میں ہوئی دھاندلی کو بے نقاب کیا

بنگلورو۔20اپریل (سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)برہت بنگلورو مہانگر پالیکے کی طرف سے وصول کئے گئے اثاثہ ٹیکس کی رقم 6680 کروڑ روپئے ، لیکن اس میں سے بینکوں میں صرف 1031 کروڑ روپئے ہی جمع ہوئے ہیں تو پھر باقی 5649 کروڑ روپئے کہاں گئے۔ اتنی بڑی رقم کس کی ایما پر غائب ہوئی۔ اس کا فوراً پتہ لگایا جائے اور خاطیوں کو گرفتار کیا جائے یہ مطالبہ آج شہر کے سابق مئیروں اور ڈپٹی مئیروں نے ایک اخباری کانفرنس میں کیا۔ آج ایک مشترکہ اخباری کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے شہر کے سابق مئیروں یس کے نٹراج، کٹے ستیہ نارائن، سابق ڈپٹی مئیر ہریش، سابق کارپوریٹر اے ایچ بسوراج وغیرہ نے کہا کہ اس ساری ہیرا پھیری کیلئے بی بی یم پی کا آئی ٹی اڈوائزر شیشادری ذمہ دار ہے۔ اسے فوراً گرفتار کیا جائے۔ سابق ڈپٹی مئیر ہریش نے بی بی یم پی کی طرف سے 2012-13 اور 2013-14 میں وصول کئے گئے اثاثہ ٹیکس کے دستاویزات پیش کرتے ہوئے بتایا کہ اس مدت میں جملہ 6680 کروڑ روپئے کا اثاثہ ٹیکس وصول ہوا اس میں سے صرف 1031 کروڑ روپئے ہی بینکوں میں جمع ہوئے۔ باقی 5649 کروڑ روپئے کا کوئی حساب نہیں مل رہا ہے۔ اس سلسلے میں جانچ ہونی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ اتنی بڑی دھاندلی کے باوجود اب تک اس کی جانچ نہیں کی گئی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ بی بی یم پی کو ٹیکس کی ادائیگی کیلئے دئے گئے 182 چیک باونس ہوچکے ہیں۔ لیکن اس پر بھی کوئی کارروائی نہیں ہوئی ان کے ذریعہ ادا کی گئی رقم وصول ہوئی ہے یا نہیں اس کے بارے میں بھی کوئی اطلاع نہیں ہے۔اس سارے معاملہ پر پردہ ڈالنے کیلئے اثاثہ ٹیکس کی وصول کیلئے نیا سافٹ ویر کاویری متعارف کروایا گیا ہے۔ پرانا سافٹ ویر اگر استعمال کیا جائیگا تو یہ پتہ چلے گا کہ یہ رقم کہاں گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی بی یم پی کے شعبہ انفارمیشن ٹکنالوجی کیلئے بطور مشیر ایک میکانیکل انجینئر شیشادری کو مقرر کیاگیا ہے۔ اس کی لاپرواہی کے نتیجے میں یہ سارا گھپلہ ہوا ہے۔ ہریش اور دیگر سابق مئیروں نے مطالبہ کیا ہے کہ اس سارے معاملہ کی جانچ سی بی آئی کے حوالے کی جائے۔ اثاثہ ٹیکس کی وصولی کیلئے فی الوقت زیر استعمال نئے سافٹ ویئر کاویری کو فوراً ترک کیا جائے اثاثہ ٹیکس کی وصولی کی نگرانی کیلئے بی جے پی کے دور اقتدار میں تمام اثاثوں کیلئے پی آئی ڈی نمبرس جاری کئے گئے۔

TOPPOPULARRECENT