Monday , January 22 2018
Home / سیاسیات / بی جے پی واشنگ مشین ہے، الزامات دھو دیتی ہے:کنہیا کمار

بی جے پی واشنگ مشین ہے، الزامات دھو دیتی ہے:کنہیا کمار

نئی دہلی۔ 10جنوری (سیاست ڈاٹ کام) جواہر لال نہرو یونیورسٹی طلبا یونین (جے این یو ایس یو) کے سابق صدر کنہیا کمار نے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کو ’’واشنگ مشین ‘‘بتاتے ہوئے کہا کہ یہ پارٹی اپنے رہنماؤں کے ’’مجرمانہ الزامات‘‘ کو دھو دیتی ہے۔ انہوں نے الزام لگایا کہ بی جے پی اور آر ایس ایس رہنماؤں کو ’’تشدد ‘‘اور ’’نفرت ‘‘پھیلانے کے لئے جانا جاتا ہے۔ انہوں نے نوجوانوں سے اپیل کی کہ وہ ان کے جال میں نہ پھنسیں۔دہلی میں منگل کویوا ہنکار ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کنہیا کمار نے کہا کہ لوک سبھا میں بی جے پی کے ایسے کئی ایم پی ہیں جن کے خلاف کیسس چل رہے ہیں۔ بی جے پی کوئی پارٹی نہیں ہے، بلکہ یہ ایک واشنگ مشین ہے جو اپنے رہنماؤں کے خلاف عائد مجرمانہ الزامات کو صاف کرنے کا کام کرتی ہے۔کنہیا کمار نے اس موقع پر تمام لوگوں سے اپیل کی کہ وہ کبھی بھی بی جے پی اور آر ایس ایس کے جھانسے میں نہ ا ٓئیں۔

 

نجیب کے بعد اب جے این یوسے ایک اور طالب علم لاپتہ
نئی دہلی۔ 10جنوری (سیاست ڈاٹ کام) نجیب احمد کے بعد اب جواہر لال نہرو یونیورسٹی (جے این یو) سے ایک اور طالب علم لاپتہ ہو گیا ہے۔ لاپتہ طالب علم کی شناخت مکل جین کی حیثیت سے کی گئی ہے۔ وہ گزشتہ دو دن سے لاپتہ ہے۔ پولیس کے مطابق غازی آباد کا رہنے والا مکل جین جے این یو میں اسکول آف لائف سائنس کا طالب علم تھا۔ وہ پیر کو جے این یو آنے کے بعد سے ہی غائب ہے۔ مکل کے ارکان خاندان نے وسنت کنج تھانے میں گمشدگی کی شکایت درج کرائی ہے۔پولیس اور جے این یو انتظامیہ کی مدد سے یونیورسٹی کیمپس میں لگے سی سی ٹی وی کیمروں کی انکوائری کرائی گئی جس میں مکل پیر کو کیمپس کے مشرقی دروازے سے دوپہر بعد ساڑھے 12 بجے نکلتے دکھائی دے رہا ہے۔ اس کے موبائل فون اور سامان کو برآمد کر لیا گیا ہے لیکن اس کا کوئی پتہ نہیں چل سکا ہے۔واضح رہے کہ اس سے پہلے 15 اکتوبر 2016 کو نجیب احمد لاپتہ ہو گیا تھا جسے لیکر جے این یو انتظامیہ اور حکومت اسٹوڈنٹس یونین کے نشانے پر ہیں۔ نجیب کی گمشدگی اپوزیشن کے لئے ایک بڑا ایشو بن گیا ۔ تاہم تمام جد و جہدکے بعد بھی سی بی آئی نجیب احمد کو اب تک تلاش نہیں کر پائی ۔

TOPPOPULARRECENT