Thursday , June 21 2018
Home / سیاسیات / بی جے پی کا ’ترشول‘ عام آدمی اور سیکولرازم کیلئے خطرہ

بی جے پی کا ’ترشول‘ عام آدمی اور سیکولرازم کیلئے خطرہ

’تری مورتی‘ کو روکنے اپوزیشن کا وسیع تر اتحاد ضروری : یچوری

’تری مورتی‘ کو روکنے اپوزیشن کا وسیع تر اتحاد ضروری : یچوری
نئی دہلی ۔ 13 اپریل (سیاست ڈاٹ کام) سی پی آئی ایم نے بی جے پی زیرقیادت حکومت کی جارحانہ ہندوتوا مہم اور اس کی سرپرستی کے خلاف اپوزیشن کے وسیع تر اتحاد پر زور دیا ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ حکومت کے نئے آزادانہ معاشی ایجنڈہ کی بھی شدید مخالفت کی۔ سی پی آئی ایم کی 6 روزہ کانفرنس کل وشاکھاپٹنم میں شروع ہورہی ہے۔ اس موقع پر پارٹی کے سینئر لیڈر سیتارام یچوری نے کانگریس کے ساتھ اتحاد کے بارے میں محتاط رویہ اختیار کیا لیکن انہوں نے کانگریس اور جنتا پریوار کے اتحاد کا خیرمقدم کیا اور کہا کہ پارلیمنٹ میں مخالف حکومت محاذ ضرور اثرانداز ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت کی ’’تری مورتی‘‘ کو روکنے کیلئے وسیع تر اپوزیشن اتحاد کی ضرورت ہے۔ انہوں نے حکومت کے نئے آزادانہ اصلاحات، جارحیت پسند ہندوتوا اور آمرانہ رجحان کو ’’تری مورتی‘‘ سے تعبیر کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی زیرقیادت حکومت ایک ایسا ’’ترشول‘‘ بن چکی ہے جس سے عام آدمی کے مفادات اور ملک کا سیکولر و جمہوری ڈھانچہ تباہ ہوسکتا ہے۔ سی پی آئی ایم کی مقبولیت میں کمی کے تعلق سے پوچھے جانے پر سیتارام یچوری نے کہا کہ ہمارے لئے سب سے اہم سوال یہی ہیکہ حقیقت پسندانہ موقف اختیار کرتے ہوئے پارٹی کو مستحکم کیا جائے۔ 10 سال قبل پارٹی اس موقف میں تھی کہ مرکز میں تشکیل حکومت کا فیصلہ کرسکتی تھی اور آج اس کی تعداد پارلیمنٹ کے دونوں ایوان میں ایک ہندسی عدد تک محدود ہوگئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مغربی بنگال اور کیرالا میں ہمیں شکست ہوئی اس کے علاوہ دیگر ریاستی اسمبلیوں میں بھی ہماری موجودگی کم ہوئی ہے۔ انہوں نے پارٹی اور قومی سیاست کو درپیش چیالنجس کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ سب سے پہلے اس ’’تری مورتی‘‘ کو ’’ترشول‘‘ بننے سے روکنا ہوگا۔

TOPPOPULARRECENT