Sunday , May 27 2018
Home / Top Stories / بی جے پی کو شکست دینے علاقائی پارٹیاں کا اتحاد ضروری:ممتا

بی جے پی کو شکست دینے علاقائی پارٹیاں کا اتحاد ضروری:ممتا

مجسموں کو توڑنے والوں کے خلاف غداری کے مقدمات درج کریں ‘ مایاوتی کا مطالبہ

کولکتہ /لکھنو ۔ 8مارچ ( سیاست ڈاٹ کام ) چیف منسٹر مغربی بنگال ممتا بنرجی نے آج تمام علاسائی پارٹیوں سے اپیل کی کہ ایک پلیٹ فارم پرجمع ہوجائیں تاکہ آئندہ سال لوک سبھا انتخابات میں بی جے پی کو شکست دی جاسکے ۔ ان کی اپیل کا پس منظر تلگودیشم پارٹی کا مرکزی حکومت سے اپنے وزراء کو ہٹالینے کا فیصلہ ہے ۔ ممتا بنرجی نے مغربی بنگال میں اقتدار پر قبضہ کرلینے بی جے پی کے خواب کا مضحکہ اڑاتے ہوئے کہا کہ اس سے پہلے مرکز میں اقتدار برقرار رکھنے پر توجہ مرکوز کرنا چاہیئے کیونکہ خطرے کی گھنٹیاں بجنا شروع ہوچکی ہیں ۔ بین الاقوامی یوم خواتین کے موقع پر کولکتہ میں ترنمول کانگریس کے زیراہتمام ریالی سے خطاب میں ممتا بنرجی نے کہا کہ اس موقع پر تمام علاقائی جماعتوں کا یکجا ہونا ضروری ہے تاکہ 2019ء کے الیکشن میں بی جے پی کو ہرایا جاسکے ۔ ’’ کیا آپ (بی جے پی ) ملک کے مختلف حصوں سے بغاوت کی آوازوں کو سن پارہے ہیں یا نہیں ؟ کیا آپ کو راجستھان ‘ مدھیہ پردیش اور گجرات کے نتائج سے کچھ اندازہ نہیں ہوتا ہے ۔ ٹی ڈی پی نے واک آؤٹ کردیا ہے ‘‘ ۔ تلگودیشم پارٹی کے سربراہ اور چیف منسٹر آندھراپردیش این چندرا بابو نائیڈو نے گذشتہ روز فیصلہ کیا کہ مودی حکومت میں شامل دو ٹی ڈی پی وزراء کو علحدہ کرلیا جائے ‘ اور اس کے ساتھ کہا کہ پارٹی نے یہ تکلیف دہ فیصلہ اپنی ریاست کے مفاد میں کیا ہے کیونکہ اور کوئی راستہ نہیں رہ گیا تھا ۔ برسراقتدار ٹی ڈی پی آندھراپردیش کیلئے خصوصی زمرہ کے درجہ کا مطالبہ کرتی آئی ہے ۔ ممتا بنرجی نے کہا کہ بی جے پی کو 2019ء میں شکست ہوگی ۔ انہیں بنگال میں اقتدار پر قبضہ کا خواب دیکھنے کے بجائے اپنا محاسبہ کرنا چاہیئے اور یہ دیکھیں کہ آیا وہ مرکز میں اقتدار برقرار رکھ پاتے ہیں یا نہیں ۔ چیف منسٹر مغربی بنگال نے کہا کہ بی جے پی کو تریپورہ میں کامیابی پر جشن نہیں منانا چاہیئے اور ساتھ ہی الزام عائد کیا کہ اس نے مرکزی فورسیس کے بیجا استعمال اورپیسہ کی طاقت کے بل بوتے پر وہاں اسمبلی چناؤ جیتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی کو تریپورہ میں اس لئے جیت حاصل ہوئی کیونکہ وہاں برسراقتدار سی پی آئی ( ایم ) کچھ مزاحمت نہیں کرپائی اور زعفرانی بریگیڈ کے آگے گھٹنے ٹیک دیئے ۔ تاہم انہوں نے نشاندہی کی کہ لیفٹ پارٹی جو وہاں 25سال سے برسراقتدار تھی ‘ اُسے زائد از 45فیصد ووٹ حاصل ہوئے ہیں ۔ دریں اثناء اترپردیش کے دارالحکومت لکھنو میں بی ایس پی کی سربراہ مایاوتی نے آج مطالبہ کیا کہ ملک کے مختلف مقامات پر دلتوں کے مسیحا بھیم راؤ امبیڈکر اور دیگر نامور شخصیتوں کے مجسموں کو نقصان پہنچا کر نقص امن اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی میں خلل ڈالنے والے غنڈہ عناصر کے خلاف غداری سے متعلق قانون کے تحت مقدمات درج کئے جانے چاہیئے ۔ حالیہ دنوں میں مجسموں کو نقصان پہنچانے کے کئی واقعات پیش آئے ہیں ۔ سابق چیف منسٹر یو پی نے اپنے ایک بیان میں کہا کہ اس طرح کی حرکتیں ملک کے مفاد میں ہرگز نہیں‘ کیونکہ اس سے جمہوری اور سیکولر تانے بانے کو اور اس کے ساتھ ساتھ فرقہ وارانہ ماحول کو نقصان پہنچتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اب تو صورتحال ایسی ہوگئی کہ اترپردیش میں تک بابا صاحب امبیڈکر کے مجسمے کو نقصان پہنچایا گیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT