Thursday , November 23 2017
Home / سیاسیات / بی جے پی کی توسیع کو روکنے قومی سطح پر عظیم اتحاد کی ضرورت

بی جے پی کی توسیع کو روکنے قومی سطح پر عظیم اتحاد کی ضرورت

2019 ء میں بی جے پی کی شکست کیلئے کانگریس اور بائیں بازو کو پہل کرنے نتیش کامشورہ
پٹنہ ۔ 3 اپریل ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) بہار کے چیف منسٹر نتیش کمار نے بی جے پی کی توسیع کو روکنے کیلئے قومی سطح پر اپوزیشن جماعتوں کا ایک عظیم اتحاد قائم کرنے کی ضرورت پر زور دیا اور کہاکہ کانگریس اور بائیں بازو کی جماعتوں کو اس ضمن میں پہل کرنا چاہئے۔ نتیش کمار نے اخباری نمائندوں سے کہا کہ ’’اُترپردیش میں بی جے پی کی فتح کی وجہ یہی تھی کہ وہاں بہار جیسا مہاگٹھ بندھن ( عظیم اتحاد) نہیں تھا۔ اگر آپ ایس پی ، کانگریس اور بی ایس پی کے ووٹوں کا فیصد جمع کریں گے تو یہ بی جے پی کو محصلہ ووٹوں سے 10 فیصد زیادہ ہے ‘‘ ۔ نتیش کمار نے جو جے ڈی (یو) کے قومی صدر بھی ہیں کہا کہ جے پی کی طاقت اور توسیع میں اضافہ کو روکنے کیلئے واحد حل یہی ہے کہ بہار جیسا عظیم اتحاد تشکیل دیا جائے اور اس کام کیلئے کانگریس اور ایس پی کو پہل کرنا چاہئے ۔ انھوں نے دعویٰ کیا کہ ’’قومی سطح پر اس طرح کا مہاگٹھ بندھن (عظیم اتحاد)مہاسنل ( عظیم فتح ) ہوگا ‘‘ ۔ بہار میں جے ڈی (یو)، آر جے ڈی اور کانگریس پر مشتمل عظیم اتحاد کے معمار کہلائے جانے والے نتیش کمار نے کہاکہ ’’بحیثیت ایک بڑی جماعت کانگریس کی یہ بھاری ذمہ داری ہے کہ وہ تمام بڑی غیربی جے پی جماعتوں کو ایک پلیٹ فارم پر جمع کرنے کیلئے پہل کرے‘‘ ۔ ہفتہ وار ’لوک سمواد‘ ( عوامی رابطہ ) پروگرام کے بعد نتیش کمار نے کہا کہ ’’اس ضمن میں بائیں بازو جماعتوں کے قائدین سے میں بات چیت کرچکا ہوں اور میری خواہش ہے کہ 2019 ء کے لوک سبھا انتخابات میں بی جے پی زیرقیادت این ڈی اے کو اقتدار سے اُکھاڑ پھینکنے کے لئے اس مقصد ( عظیم اتحاد کی تشکیل ) کیلئے پہل کریں‘‘ ۔ پانچ ریاستوں کے حالیہ انتخابات کے نتائج پر تبصرہ کرتے ہوئے بہار کے چیف منسٹر نے کہاکہ بی جے پی غیرضروری طورپر ان نتائج کا جشن منارہی ہے حالانکہ یہ ملے جلے نتائج ہیں۔ نتیش نے کہاکہ ’’کانگریس پنجاب میں فاتح جماعت کی حیثیت سے اُبھری ہے اور دو ریاستوں گوا اور منی پور میں بھی کانگریس ہی سب سے بڑی جماعت کی حیثیت سے اُبھری ہے ۔ چنانچہ یہ سمجھ لینا غلط ہوگا کہ نتائج بی جے پی کے حق میں تھے ‘‘۔ انھوں ( بی جے پی) نے گوا اور منی پور میں توڑ ۔جوڑ کے ذریعہ تشکیل حکومت کا بندوبست کیا ہے ۔ دہلی میں 23 اپریل کو مقررہ بلدی انتخابات میں جے ڈی ( یو ) ، آر جے ڈی ، کانگریس اور عام آدمی پارٹی الگ الگ مقابلے کے بارے میں نتیش نے کہا کہ یہ مجالس مقامی کے انتخابات ہیں جن میں ہر پارٹی کو اپنے امیدوار نامزد کرنے کا حق ہے۔ میونسپل کارپوریشن آف دہلی ( ایم سی ڈی ) کے انتخابات کو اپوزیشن جماعتوں کے مابین اتحاد کے فقدان کی نظر سے نہیں دیکھا جانا چاہئے ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT