Friday , October 19 2018
Home / Top Stories / بی جے پی کی ’’سمپرک برائے سمرتھن‘‘ مہم

بی جے پی کی ’’سمپرک برائے سمرتھن‘‘ مہم

شاہی امام کے چبھتے سوالات سے مرکزی وزیر وجئے گوئل پریشان

نئی دہلی 11 جون (سیاست ڈاٹ کام) بی جے پی کی مہم سمپرک برائے سمرتھن، مرکزی وزیر وجئے گوئل نے ہفتہ کو جامع مسجد دہلی کے شاہی امام مولانا سید احمد بخاری سے دہلی میں ملاقات کی۔ اُردو روزنامہ انقلاب کے مطابق احمد بخاری نے مرکزی وزیر گوئل سے چبھتے ہوئے سوالات کرتے ہوئے وجئے گوئل کو پریشان کردیا۔ پہلا سوال احمد بخاری نے ’’سب کا ساتھ، سب کا وکاس‘‘ نعرہ کے نفاذ پر کیا جو 2014 ء میں مودی کے بحیثیت وزیراعظم آنے پر دیا گیا تھا۔ شاہی امام نے مزید کہاکہ مسلمانوں کو بائیکس، بسوں اور ٹرینوں میں نشانہ بنایا جاتا ہے ہمیں گالیاں دی جاتی ہیں۔ اس پر کارروائی کیوں نہیں کی گئی جو تنہا ایک آدمی یا شخص نہیں بلکہ پورا ہجوم شامل ہوتا ہے اور جس کی رپورٹنگ بھی ہوتی ہے۔ شاہی امام نے اس سلسلہ میں مزید کہاکہ ابھی انتخابات منعقد ہونے میں ایک سال باقی ہے۔ اگر حکومت کچھ کارروائی کرے تو بہتر ہے لیکن صرف یہی ایک شکایت نہیں بلکہ کئی شکایات میں سے ایک (اہم) ہے۔ واضح رہے کہ مذکورہ مہم کا آغاز بی جے پی نے اس مقصد کے ساتھ کیا ہے کہ عوام کی رائے اس کے بارے میں کیا ہے اور مرکزی حکومت کے بارے میں اور اس کی کارکردگی کے سلسلہ میں ان کی کیا رائے ہے۔ اس مہم کے لئے عوامی منتخبہ شخصیتوں بشمول فلمی دنیا، اسپورٹس و دیگر تمام شعبوں سے رابطہ کیا جارہا ہے تاکہ ان سے 2019 ء میں ہونے والے انتخابات میں اُن کی ذہن سازی کرتے ہوئے بی جے پی کی کامیابی کی راہ ہموار کی جاسکے۔ اس ضمن میں امیت شاہ نے سابق آرمی چیف جنرل دلبیر سنگھ سہاگ، سابق کرکٹ کیپٹن کپل دیو، یوگا گرو رام دیو، سابق چیف جسٹس آف انڈیا آر سی لوہاٹی، بالی ووڈ اداکارہ مادھوری ڈکشٹ اور صنعت کار رتن ٹاٹا سے ملاقات کی۔ قبل ازیں یوپی کے وزیراعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ نے بالی ووڈ اداکار سنجے دت سے لکھنؤ میں ملاقات کی اور انھیں نریندر مودی کی حیات پر تصنیف کردہ کتاب پیش کی گئی۔ اس مہم کے تحت امیت شاہ 50 افراد سے شخصی طور پر ملاقات کریں گے جس میں انھیں اپنے ملاقاتی کو حکومت کے اقدامات اور کامیابیوں سے روشناس کروایا جائے گا جبکہ عام بی جے پی کارکن 10 افراد سے مذکورہ بالا مندرجات کے تحت ملاقات کرے گیا۔

TOPPOPULARRECENT