Tuesday , September 25 2018
Home / شہر کی خبریں / بی جے پی کے خلاف تیسرے محاذ کی دوبارہ سرگرمیاں

بی جے پی کے خلاف تیسرے محاذ کی دوبارہ سرگرمیاں

مایاوتی اور ممتا بنرجی متحرک، کمارا سوامی نے کے سی آر اور نائیڈو سے شمولیت کی اپیل کی
حیدرآباد ۔ 17 ۔ مئی (سیاست نیوز) کرناٹک چناؤ کے بعد پیدا شدہ سیاسی حالات نے ملک میں تیسرے محاذ کی تشکیل کے سلسلہ میں علاقائی جماعتوں کو متحرک کردیا ہے ۔ درکار اکثریت نہ ہونے کے باوجود کرناٹک میں یدی یورپا کی حلف برداری سے ناراض بہوجن سماج پارٹی کی سربراہ مایاوتی اور چیف منسٹر مغربی بنگال ممتا بنرجی نے علاقائی جماعتوں سے اپیل کی کہ وہ بی جے پی کو شکست دینے کیلئے متحد ہوجائیں۔ دوسری طرف جنتا دل سیکولر کے صدر ایچ ڈی کمار سوامی نے تلنگانہ اور آندھراپردیش کے چیف منسٹرس سے اپیل کی کہ جمہوریت کے تحفظ کیلئے وہ علاقائی جماعتوں کے اتحاد میں شامل ہوجائیں ۔ کمارا سوامی جنہیں کانگریس اور جنتا دل سیکولر اتحاد نے چیف منسٹر کے عہدہ کیلئے اپنا امیدوار منتخب کیا ہے ، بنگلور میں میڈیا کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے اعلان کیا کہ علاقائی جماعتیں مرکزی حکومت کے خلاف متحدہ طور پر جدوجہد کریں گی ۔ غیر بی جے پی علاقائی جماعتوں کو اس جدوجہد میں شامل ہونا چاہئے ۔ کمارا سوامی نے کے چندر شیکھر راؤ اور چندرا بابو نائیڈو سے تعاون کی اپیل کی۔ انہوں نے کہا کہ جے ڈی ایس ارکان اسمبلی کو انفورسمنٹ ڈائرکٹوریٹ کے ذریعہ دھمکانے کا کوشش کی جارہی ہے ۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ ارکان اسمبلی کی خرید و فروخت کیلئے گورنر نے یدی یورپا کو اکثریت ثابت کرنے 15 دن کا وقت دیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کرناٹک کی صورتحال نے ملک بھر کی جمہوریت پسند طاقتوں کو جھنجھوڑ کر رکھ دیا ہے۔ واضح رہے کہ حال ہی میں کے چندر شیکھر راؤ نے بنگلور پہنچ کر ایچ ڈی دیوے گوڑا اور کمارا سوامی سے ملاقات کرتے ہوئے بی جے پی اور کانگریس کے خلاف تیسرے محاذ کے قیام میں تعاون کی خواہش کی تھی۔ کے سی آر نے کرناٹک کے انتخابات میں جنتا دل سیکولر کی تائید کا اعلان کیا تھا ۔

TOPPOPULARRECENT