Tuesday , September 25 2018
Home / Top Stories / بی جے پی کے ساتھ اتحاد برقرار رکھنے تلگودیشم کا فیصلہ

بی جے پی کے ساتھ اتحاد برقرار رکھنے تلگودیشم کا فیصلہ

آندھرا پردیش کے مطالبات پر اندرون دو تین دن خوشگوار نتائج ممکن ‘ مرکزی وزیر سوجنا چودھری
امراوتی 4 فبروری ( پی ٹی آئی ) تلگودیشم پارٹی نے آج کہا کہ آندھرا پردیش اور مرکز میں بی جے پی کے ساتھ اس کا اتحاد برقرار رہے گا ۔ یہ قیاس آرائیاں کی جا رہی تھیں کہ مرکزی بجٹ میں آندھرا پردیش کو خاطر خواہ رقومات کی عدم فراہمی پر تلگودیشم پارٹی شدید ناراض ہے ۔ تلگودیشم لیڈر و مرکزی وزیر وائی سوجنا چودھری نے آج دو پہر میڈیا کو ایک اجلاس کی تفصیلات سے واقف کرواتے ہوئے یہ بات بتائی ۔ اجلاس چیف منسٹر چندر ابابو نائیڈو نے طلب کیا تھا جس میں مرکزی بجٹ اور دیگر امور پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔ مسٹر چودھری نے اجلاس کے بعد میڈیا سے کہا کہ جب کبھی ضروری ہوگا چیف منسٹر و پارٹی صدر چندرا بابو نائیڈو موقع کی مناسبت سے کوئی فیصلہ کرینگے ۔ انہوں نے کہا کہ فی الحال جو صورتحال ہے اس کے مطابق اتحاد برقرار ہے ۔ انہوں نے کہا کہ تلگودیشم نے کبھی بھی تعلقات ختم کرنے کی بات نہیں کی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ہماری ریاست کو آندھرا پردیش کی تقسیم سے مشکلا کا سامنا ہے ۔ عوام مطمئن نہیں ہیں کیونکہ مرکزی بجٹ میں ریاست کے بجٹ کا کوئی تذکرہ نہیں ہے ۔ آج کے اجلاس میں اس پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا ہے ۔ اس اجلاس میں پارٹی کے ارکان پارلیمنٹ ‘ ریاستی وزرا ‘ سینئر قائدین اور دوسروں نے شرکت کی ۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے پہلے ہی مرکزی وزیر فینانس اور وزیر ریلوے سے وشاکھاپٹنم میں ریلوے زون کے قیام کے تعلق سے بات چیت کی ہے اور ہمیں امید ہے کہ آئندہ دو تا تین دن میں مسئلہ حل کرلیا جائیگا ۔ چودھری نے کہا کہ تلگودیشم پارٹی ضرورت پڑنے پر ریاست کے مسائل کو پارلیمنٹ میں اٹھائیگی ۔ تلگودیشم پارٹی اس بات پر ناراض ہے کہبجٹ میں ریاست کو خاطر خواہ فنڈز فراہم نہیں کئے گئے ہیں اور نہ ہی ریاست کیلئے کوئی خصوصی معاشی پیکج دیا گیا ہے ۔تلگودیشم کا یہ بھی مطالبہ ہے کہ وشاکھاپٹنم میں ایک ریلوے زون قائم کیا جائے ۔ انہوں نے کہا کہ ریاست کے عوام امیدوں کے ساتھ مرکز کی سمت دیکھ رہے ہیں۔ مرکز نے کچھ کیا ہے لیکن بہت کچھ کرنا باقی ہے ۔ ہم اس پر تبادلہ خیال کرینگے اور آئندہ دو تین دن میں مسئلہ حل ہوسکتاہے ۔

TOPPOPULARRECENT