Sunday , June 24 2018
Home / شہر کی خبریں / بے روزگاری کے خاتمہ کیلئے کانگریس کی مہم کا آغاز

بے روزگاری کے خاتمہ کیلئے کانگریس کی مہم کا آغاز

حکمراں جماعت کے وزراء اور ارکان اسمبلی کو آج سے یادداشت کی پیشکشی: پونم پربھاکر

حکمراں جماعت کے وزراء اور ارکان اسمبلی کو آج سے یادداشت کی پیشکشی: پونم پربھاکر
حیدرآباد /19 فروری (سیاست نیوز) تلنگانہ پردیش کانگریس نوجوانوں کی بے روزگاری کے خلاف کل سے ریاست کے تمام اضلاع میں حکمراں جماعت کے ارکان اسمبلی اور وزراء کو یادداشت پیش کرے گی۔ آج گاندھی بھون میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے سابق رکن پارلیمنٹ پونم پربھاکر نے یہ بات بتائی۔ اس موقع پر کانگریس کے ارکان اسمبلی ومشی چند ریڈی اور سمپت کمار بھی موجود تھے۔ مسٹر پربھاکر نے کہا کہ تلنگانہ میں ٹی آر ایس حکومت کے 8 ماہ مکمل ہو چکے ہیں، تاہم اس دوران ایک بھی سرکاری جائداد پر تقرر نہیں ہوا۔ انھوں نے کہا کہ تلنگانہ میں بے روزگاری کی شرح بہت زیادہ ہے، جس کو دور کرنے میں حکومت ناکام ہوچکی ہے۔ انھوں نے کہا کہ بے روزگاری کے خلاف تحریک چلانے والی طلبہ تنظیموں کے ساتھ مل کر کانگریس طلبہ تنظیم (این ایس یو آئی) اور یوتھ کانگریس، تلنگانہ کے تمام اضلاع جہاں حکمراں جماعت کے ارکان نمائندگی کرتے ہیں، انھیں یادداشت پیش کرتے ہوئے سرکاری جائدادوں پر تقررات کے لئے حکومت سے نمائندگی پر زور دے گی اور یہ تحریک اسمبلی کے بجٹ اجلاس کے آغاز تک جاری رہے گی۔ دریں اثناء یوتھ کانگریس کے صدر ومشی چند ریڈی نے کہا کہ جن مقاصد کی تکمیل کے لئے طلبہ اور نوجوانوں نے تلنگانہ تحریک میں اہم رول ادا کیا تھا، اقتدار سنبھالنے کے بعد ٹی آر ایس حکومت ان کے خوابوں کو پورا نہیں کرسکی۔ انھوں نے کہا کہ روزگار فراہمی کے معاملے میں حکومت کے پاس کوئی منصوبہ نہیں ہے، جس کی وجہ سے تلنگانہ میں غیر یقینی صورت حال پیدا ہو گئی ہے، لہذا کانگریس پارٹی حکومت کے خلاف احتجاج کرکے حکومت کو توجہ دلائے گی۔ اسی دوران سمپت کمار نے کہا کہ متحدہ آندھرا پردیش میں تلنگانہ نوجوانوں کے ساتھ ملازمت کی فراہمی میں ناانصافی کے خلاف تلنگانہ تحریک شروع ہوئی تھی، لیکن اب علحدہ ریاست کی تشکیل کے بعد ٹی آر ایس حکومت بھی روزگار کی فراہمی میں ناکام ہے۔

TOPPOPULARRECENT