Thursday , November 23 2017
Home / دنیا / تائیوان کی تائید پر تعلقات بگڑ سکتے ہیں، ٹرمپ کو چین کا انتباہ

تائیوان کی تائید پر تعلقات بگڑ سکتے ہیں، ٹرمپ کو چین کا انتباہ

بیجنگ ۔ 13 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) چین نے امریکہ کے نومنتخبہ صدر ڈونالڈ ٹرمپ کو انتباہ دیا ہیکہ اگر انہوں نے تائیوان کے ساتھ قربتیں بڑھائیں تو چین ۔ امریکہ تعلقات خراب ہوسکتے ہیں۔ چین کی وزارت خارجہ کے ترجمان گینگ شوانگ نے سخت لہجہ اپناتے ہوئے کہا کہ ’’متحدہ چین‘‘ کا تصور تائیوان کو اہمیت دے کر ختم نہیں کی جاسکتی۔ یہ چین کی پالیسی رہی ہے جس پر امریکہ کو بھی عمل پیرا ہونا چاہئے اور اگر امریکہ ایسا نہیں کرتا تو چین ۔ امریکہ تعلقات میں بگاڑ پیدا ہونے کے پورے اندیشے موجود ہیں اور اس طرح دونوں ممالک کے ہر شعبہ میں پائے جانے والے تعاون کو زبردست دھکا لگے گا۔ یاد رہیکہ ٹرمپ نے ایک ٹیلیویژن انٹرویو میں کہا تھا کہ اگر چین تجارت کے شعبہ میں رعایت نہیں کرے گا تو اس کی ’’واحد چین‘‘ والی پالیسی ناکام ہوسکتی ہے۔ امریکہ نے 1979ء سے تائیوان کے تئیں چینی پالیسی کا احترام کیا ہے تاہم ٹرمپ کا یہ ماننا ہیکہ جب تجارت کے شعبہ میں کوئی رعایت نہ ہوگی تو چین کی ’’متحدہ چین‘‘ پالیسی کو ہم کیوں مانیں؟ گینگ شوانگ نے صحافیوں کے ذریعہ پوچھے گئے سوالات کا  جواب دیتے ہوئے کہا کہ حالیہ دنوں میں کسی امریکی قائد کی جانب سے تائیوان پر یہ پہلا ریمارک ہے جو دراصل چین کی خودمختاری اور اس کے داخلی معاملات میں دخل اندازی کے مترادف ہے۔ اس کے باوجود بھی چین نے کوئی سفارتی نوعیت کا احتجاج نہیں کیا ہے۔ ٹرمپ نے بھی مزید سخت لہجہ اپناتے ہوئے چین پر الزام عائد کیا کہ وہ شمالی کوریا کی کرنسی اور جنوبی چائنا سی کے تعلق سے پیدا ہوئی، کشیدگی کو دور کرنے امریکہ کے ساتھ تعاون نہیں کررہا ہے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT