Tuesday , November 21 2017
Home / Top Stories / تاج محل شیومندر تھا ، شاہجہاں نے مقبرہ بنادیا

تاج محل شیومندر تھا ، شاہجہاں نے مقبرہ بنادیا

BJP's senior leader Vinay Katiyar addressing a press conference at the state party headquarters in Lucknow on Wednesday. Express photo by Vishal Srivastav *** Local Caption *** BJP's senior leader Vinay Katiyar addressing a press conference at the state party headquarters in Lucknow on Wednesday. Express photo by Vishal Srivastav

عظیم عمارت ہندوستانی ورثہ ، بہرصورت حفاظت و سلامتی ضروری : ونئے کٹھیار
لکھنو ۔ 18 اکتوبر ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) تاج محل پر پیداشدہ تنازعہ کو ایک نیاموڑ دیتے ہوئے بی جے پی کے ایک سینئر لیڈر ونئے کٹھیار نے آج کہاکہ ’’تیجومحل‘‘ سے معروف یہ لارڈ شیو کا مندر تھا جس کو مغل شہنشاہ شاہجہاں نے مقبرہ میں تبدیل کردیا ۔ تاہم انھوں نے کہاکہ وہ نہیں چاہتے کہ اس یادگار کو منہدم کیا جائے جو غیرمعمولی طورپر مشہور ہے اور دنیا کے سات عجوبوں میں شامل ہے ۔ ونئے کٹھیار نے کہا کہ چیف منسٹر یوگی آدتیہ ناتھ کے دورۂ تاج محل پر انھیں کوئی اعتراض نہیں ہے جو سیاحتی اسکیموں کا جائزہ لینے کیلئے یہ دورہ کررہے ہیں ۔ ایودھیا میں رام مندر تحریک کے اول دستہ میں شامل رہنے والے ونئے کٹھیارنے کہا کہ ’’وہ (تاج محل) تیجو محل دراصل لارڈ شیوا کا مندر تھا ۔ جہاں شاہجہاں نے اپنی زوجہ کو دفن کیا او اس کو مقبرہ میں تبدیل کردیا‘‘ ۔ ونئے کٹھیار نے مزید کہا کہ ’’یہ ہندو بادشاہوں کی طرف سے تعمیر کروایا گیا تھا ۔ اس کے کمرے اور تراشیدہ نقوش اس کے ہندو یادگار ہونے کاثبوت دیتے ہیں۔ ایک مورخ پی این اوک نے بھی اس خیال کا اظہار کیا ہے ’’انھوں نے کہاکہ ایک شیومندر کی طرح محل کی چھتوں جیسے پانی کے فوارے کہیں بھی کسی دوسرے مقبرہ میں نہیں دیکھے گئے اور صرف شیولنگ پر ہی دیکھے گئے ہیں ۔ کٹھیار نے کہاکہ ’’یہ مشہور یادگار ہے اور جس پر شاہجہاں نے قبضہ کرلیا‘‘۔ انھوں نے مزید کہاکہ ’’یہ ہماری مندر تھی لیکن اس کو مقبرہ بنادیا گیا کیونکہ اُن کے پاس بہت زیادہ طاقت تھی ۔ بہرحال یہ ایک عظیم یادگار اور قومی ورثہ ہے ۔ لوگ اس کو دیکھنے آتے ہیں چنانچہ اس کو صحیح سلامت اور محفوظ رکھا جانا چاہئے ‘‘ ۔ کٹھیار نے جو ایودھیا میں بابری مسجد کے انہدام کے مقدمہ میں ملزم بھی ہیں کہاکہ آدتیہ ناتھ حکومت کی جانب سے ایودھیا میں بڑے پیمانے پر منائی جانیوالی دیوالی تقاریب کے کوئی سیاسی معنی و مطلب اخذ نہیں کیا جانا چاہئے۔ انھوں نے کہاکہ اس تقریب کے پیچھے ایسی کوئی سیاست نہیں ہے جو اپوزیشن دیکھ رہی ہے ۔ ’’اس تقریب کامقصد ایودھیا کو ترقی دینا ہے اور لارڈ رام کی جلاوطنی سے ایودھیا میں واپسی جیسا منظر بنانے کی کوش کی جارہی ہے ‘‘ ۔ رام مندر کی تعمیر کے مسئلہ پر کٹھیار نے اُمید ظاہر کی کہ اندرون ایک سال عدالت کافیصلہ ہوجائے گا کیونکہ اس مقدمہ کی روزانہ بنیاد پر سماعت ہورہی ہے ۔ بی جے پی لیڈر نے کہاکہ ’’میں اُمید کرتا ہوں کہ رام مندر کی تعمیر کیلئے ہم کوئی راستہ تلاش کرلیں گے یا پھر ہم سومناتھ مندر کے خطوط پر بھی یہ تعمیر کرسکتے ہیں۔ ہم متبادل امکانات کاجائزہ لے رہے ہیں کہ آیا بات چیت کے ذریعہ یا پھر سومناتھ مندر کے خطوط پر ایودھیا میں رام مندر کی تعمیر کی جائے ۔ بہرحال ہم مندر چاہتے ہیں ‘‘ ۔ بی جے پی لیڈر نے کہاکہ پہلی منزل کے لئے پتھروں کو تراشنے کا کام مکمل ہوگیا ہے ۔ دوسری منزل کیلئے یہ کام جاری ہے ۔ ’’جیسے ہی ہمیں اراضی مل جائے گی ہم تعمیر شروع کرسکتے ہیں‘‘ ۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT