Wednesday , December 13 2017
Home / شہر کی خبریں / تاریخی قلعہ گولکنڈہ میں جشن آزادی تقریب کی جھلکیاں

تاریخی قلعہ گولکنڈہ میں جشن آزادی تقریب کی جھلکیاں

حیدرآباد 15اگست (سیاست نیوز) چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے چندر شیکھر راو مقررہ پروگرام کے مطابق 9.55بجے قلعہ گولکنڈہ پہونچے اور پرچم کشائی انجام دینے سے قبل مدعوئین کی طرف آگے بڑھتے ہوئے تمام اہم قائدین مسرس قائد اپوزیشن اسمبلی مسٹر کے جانا ریڈی ‘صدر تلنگانہ کانگریس کمیٹی اتم کمار ریڈی‘قائد کانگریس مقننہ پارٹی تلنگانہ قانون ساز کونسل مسٹر محمد علی شبیر ‘صدر نشین قانون ساز کونسل سوامی گوڑ ‘اسپیکر قانون ساز اسمبلی تلنگانہ مدھو سدن چاری ‘ڈپٹی چیف منسٹر امور ریونیو‘ مسٹر محمود علی و دیگر سے فرداً فرداً مصافحہ کیا اور یوم آزادی کی مبارکباد دی۔
٭٭ چیف منسٹر نے بعدازاں مختلف میڈلس حاصل کرنے والے اعلی عہدیداروں بشمول پولیس عہدیداروں وغیرہ سے بھی فرداً فرداً مصافحہ کر تے ہوئے ملاقات کی اور ان عہدیداروں کو بھی مبارکباد پیش کی ۔
٭٭ قلعہ گولکنڈہ میں منعقدہ یوم آزادی تقریب میں چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راو نے افراد خاندان بشمول شریمتی کویتا‘ رکن پارلیمان وغیرہ بھی شریک تھے ۔
٭٭چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راو نے یوم آزادی تقریب سے صرف 16 منٹ مخاطب کرکے اپنی تقریر ختم کی اور اس تقریر کے دوران چیف منسٹر نے انتخابات کے موقع پر عوام سے کہے ہوئے وعدوں اور برسر اقتدار آنے کے بعد عوام کو دیئے گئے تیقنات اسمبلی میں بجٹ کی پیشکشی کے موقع پر ایوان میں اپنی کی گئی تقریر کے بعض اہم نکات کا اعادہ کیا۔
٭٭ چیف منسٹرنے اپنی تقریر کے دوران چیف منسٹر آندھرا پردیش مسٹر این چندرا بابو نائیڈو کو ایک موقع پر اپنی سخت تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ حیدرآباد کو ترقی دینے کا ادعا کرنے والے مسٹر نائیڈو نے شہر حیدرآباد میں پانی کے مسئلہ پر کبھی توجہ نہیں دی ۔
٭٭ مسٹر کے چندر شیکھر راو نے اپنی تقریر کے دوران صرف ایک مرتبہ درج فہرست اقوام و قبائیل پسماندہ اور اقلیتی طبقات کا تذکرہ کیا لیکن آئندہ ان طبقات کی ترقی کیلئے کئے جانے والے کوئی اقدامات کا تذکرہ نہیں کیا ۔ یہاں تک کہ خواتین کی فلاح و بہبود کا بھی تذکرہ نہیں کیا ۔
٭چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راو نے گذشتہ سال یوم آزادی کے موقع پر قلعہ گولکنڈہ میں حصول تلنگانہ کیلئے اپنی قربانیاں دینے والے شہیدان تلنگانہ کا تذکرہ کیا تھا لیکن آج اسی قلعہ گولکنڈہ کے مقام پر کی گئی اپنی تقریر میں شہیدان تلنگانہ کا کم از کم تذکرہ بھی نہیں کیا ۔
٭٭چیف منسٹر اپنی تقریر کے ختم ہونے کے ساتھ ہی میڈلس حاصل کرنے والے اعلی عہدیداروں کے ساتھ تصویر کھینچوائی اور پھرچند منٹوں کیلئے طلباء کے پیش کردہ تہذیبی پروگراموں کا مشاہدہ کیا۔
٭٭چیف منسٹر مسٹر کے چندر شیکھر راو نے 40 منٹ تک یوم آزادی تقریب میں شرکت کے بعد قلعہ گولکنڈہ سے روانہ ہوگئے ۔
٭٭ قلعہ گولکنڈہ میں منعقدہ یوم آزادی تقریب کے موقع پر پولیس کے سخت صیانتی انتظامات کئے گئے تھے یہاں تک کہ مقامی عوام کو بھی عام راستہ سے بغیر پاس کے اپنے  مکانات جانے کی پولیس کی جانب سے اجازت نہیں دی جارہی تھی علاوہ ازیں گولکنڈہ ایریا ہاسپٹل تک بھی نہ ہی مریضوں کو بلکہ مریضوں کی تیمار داری کرنیو الے افراد کو بھی دواخانہ میں جانے کی اجازت نہیں دی جارہی تھی جس کی وجہ سے عوام کو کافی مشکلات سے دوچار ہونا پڑا ۔

TOPPOPULARRECENT