Tuesday , December 11 2018

تاریخی مکہ مسجد کی نادر و نایاب جالیاں خستہ حالی کا شکار

سنگ مرمر کی جالیاں جگہ جگہ سے اُکھڑ رہی ہیں

سنگ مرمر کی جالیاں جگہ جگہ سے اُکھڑ رہی ہیں
حیدرآباد 15 مارچ (ابوایمل) دکن میں ہزاروں مساجد موجود ہیں مگر ان ہزاروں مساجد میں سے صرف دو مساجد مکہ مسجد اور شاہی مسجد باغ عامہ کی دیکھ بھال کی ذمہ داری محکمہ اقلیتی بہبود پر ہے۔ مگر یہ ایک المیہ ہی ہے کہ مذکورہ محکمہ صرف ان دو مساجدکے انتظام و انصرام اور دیکھ بھال سے بھی قاصر نظر آرہا ہے۔ محکمہ اقلیتی بہبود یا ڈپارٹمنٹ آف آرکیالوجیکل سروے آف انڈیا کو بالکل پرواہ نہیں ہے کہ ان مساجد کی دیکھ بھال باقاعدہ طور پر کی جائے۔ مکہ مسجد کے کئی ایک مسائل ہیں جو عرصہ دراز سے حل طلب ہیں۔ مثال کے طور پر ایک کروڑ 30 لاکھ روپئے کے صرفہ سے تعمیر کیا گیا واٹر سمپ تعمیر کے بعد بھی جوں کا توں پڑا ہوا ہے۔ طہارت خانے کی ازسرنو تعمیر بھی التواء کا شکار ہے۔ مکہ مسجد کے حوض کا مسئلہ بھی ویسا ہی ہے۔ کمیکل صفائی پر 37 لاکھ روپئے خرچ کئے گئے، آج وہاں جھاڑ نکل گئے ہیں۔ اب اس کی صفائی پر کوئی توجہ دینے والا نہیں ہے۔ اب ایک نیا مسئلہ اور متعلقہ محکمہ جات کی لاپرواہی سامنے آئی ہے اور وہ یہ ہے کہ مکہ مسجد کے اندرونی باب الداخلہ سے پہلے آصف جاہی حکمرانوں کے دور میں سنگ مرمر کی جو جالیاں نصب کی گئی تھیں، آج وہ انتہائی خستہ حالی کا شکار ہوچکی ہیں۔ یہ تاریخی جالی کئی جگہ سے شکستہ ہوکر ٹوٹ پھوٹ چکی ہے۔ بعض مقامات پر تو حالت یہ ہے کہ اگر ذرا سا دھکہ لگا، یا کسی نے سہارا لینے کی کوشش کی تو گرجانے کا خدشہ ہے۔ جسے آپ زیرنظر تصویر میں یا خود جاکر مشاہدہ کرسکتے ہیں۔ اگر خدانخواستہ ایسا ہوتا ہے تو پھر لاکھ جتن کے باوجود اس قدر خوبصورت سنگ تراشی کی سنگ مرمر کی جالی دوبارہ نصب نہیں کی جاسکتی اس لئے اس اہم ترین مسئلہ کی یکسوئی ضروری ہے۔

TOPPOPULARRECENT