Sunday , November 19 2017
Home / شہر کی خبریں / تاریخی مکہ مسجد کے تحفظ کی باتیں کرنے والے عہدیدار غائب

تاریخی مکہ مسجد کے تحفظ کی باتیں کرنے والے عہدیدار غائب

عمارت کو لاحق خطرات سے بے پرواہ مقامی قائدین کے دعوے بھی ادھورے
حیدرآباد۔12ستمبر(سیاست نیوز) تاریخی مکہ مسجد کے تحفظ کیلئے اندرون 10یوم تعمیری و تزئین نو کے کاموں کا آغاز کرنے کے اعلانات کرنے والے مجاز عہدیداروں اور سیاسی قائدین و نمائندے ابھی تک غائب ہیں اور تاریخی مکہ مسجد کی عمارت کو لاحق خطرات سے بے پرواہ نظر آرہے ہیں ۔ تحفظ مکہ مسجد کے نام سے شہر حیدرآبادکی مختلف تنظیموں و جماعتوں کے قائدین کے دورہ مکہ مسجد کے فوری بعد سیاسی قائدین بالخصوص مقامی منتخبہ عوامی نمائندوں نے مکہ مسجد پہنچ کر دعوی کیا تھا کہ اندرون 5یوم تزئین نو کے کاموں کا آغاز کیا جائے گا اور اس کے بعد ریاستی وقف بورڈ کے صدرنشین جناب الحاج محمد سلیم کے علاوہ محکمہ اقلیتی بہبود کے اعلی عہدیدارو ںنے مکہ مسجد کا دورہ کرتے ہوئے یہ دعوی کیا تھا کہ محکمہ آثار قدیمہ کے تعاون سے اندرون ایک ہفتہ مکہ مسجد کی مرکزی عمارت اور صحن میں موجود آصف جاہی سلاطین کے مقبروں کی عمارت کی مرمت کے آغاز کا اعلان کیا گیا تھا لیکن ان اعلانات کے بعد عہدیداروں نے عیدالاضحی کا بہانہ کرتے ہوئے اس کام کو مزید لیت ولعل کا شکار بنائے رکھا اور اب جبکہ عیدالاضحی کو گذرے ہوئے بھی ایک ہفتہ سے زائد کا عرصہ گذر چکا ہے اب تک بھی ان کاموں کا آغاز نہیں ہو پایا ہے۔ محکمہ آثار قدیمہ کے ذرائع کے مطابق شہر حیدرآباد کی اس عظیم تاریخی مکہ مسجد کی مرمت کے کاموں کے آغاز سے قبل اس کی باضابطہ افتتاحی تقریب کے انعقاد کے لئے سفارش کی جا رہی ہے اور کہا جا رہا ہے کہ کاموں کے آغا ز سے قبل ایک تقریب منعقد کی جائے اور مقامی سیاسی قائدین اور منتخبہ عوامی نمائندوں کو بھی اس میں مدعو کیا جائے اسی لئے مسجد کے مرمتی کاموں میں تاخیر ہورہی ہے۔ بتایاجاتاہے کہ مکہ مسجد کے تحفظ کیلئے شروع کی گئی عوامی تحریک کے دباؤ کے تحت بجٹ کی اجرائی کا عمل شروع ہونے اور عوام کو اس بات کا احساس ہونے کے بعد منتخبہ عوامی نمائندوں کی جانب سے یہ تاثر دینے کی کوشش کی جا رہی ہے کہ ان کی جانب مکہ مسجد کی مرمت اور عمارت کے تحفظ کیلئے کی گئی نمائندگی پر بجٹ جاری کیا گیا ہے۔
لیکن عوام کو اس بات کا یقین نہیں ہے اور اسی وجہ سے قائدین اس بات کی کوشش میں ہیں کہ مرمتی کاموں کی افتتاحی تقریب کے انعقاد کے ذریعہ اس بات کو ثابت کیا جائے۔مکہ مسجد کی مرکزی عمارت جو کہ تاریخی اہمیت کی حامل ہے اس عمارت کے تحفظ کے لئے محکمہ آثار قدیمہ کی جانب سے مرمتی اشیاء کی مسجد منتقلی اور اوزار وغیرہ لانے کا عمل شروع کردیا گیا ہے لیکن اب بھی منتخبہ عوامی نمائندوں کی تقریب کا سلسلہ مرمتی کاموں میں رکاوٹ بنا ہوا ہے اور اس رکاوٹ کے دور ہوتے ہی مکہ مسجد کے مرمتی کاموں کا عملی آغاز ہوجائے گا۔

TOPPOPULARRECENT