Sunday , June 24 2018
Home / شہر کی خبریں / تاریخی چارمینار کے پاس سے گائے دوسری جگہ منتقل

تاریخی چارمینار کے پاس سے گائے دوسری جگہ منتقل

حیدرآباد ۔ 15 ۔ دسمبر : ( نمائندہ خصوصی) : 14 دسمبر اتوار کے شمارے میں تاریخی چارمینار کے قریب یو پی کے باشندے پنڈت رام دلارے مشرا کے چارمینار کے پاس ایک گائے کے ساتھ بیٹھنے ، چارہ کھلانے اور پیسہ کمانے کی تفصیلی رپورٹ پیش کی گئی تھی جس کا مقصد یہ تھا کہ تاریخی مقام کو مزید کسی تنازعہ میں نہ گھسیٹا جائے اور اطراف و اکناف وزیر اعظم کے سوچھ بھارت ابھیان کو مد نظر رکھتے ہوئے صاف ستھرا رکھا جائے ۔ پولیس سے بھی خواہش کی گئی تھی کہ اس نئے تماشے کو فوری برخاست کیا جائے ۔ جس کا نتیجہ یہ ہوا کہ پولیس نے اس معاملہ کو انتہائی سوجھ بوجھ اور پرامن طریقے سے حل کرلیا ۔ آج چارمینار کا دورہ کیا گیا تو وہاں گائے اور گائے کے مالک مشرا کو وہاں نہیں پایا ۔ بتایا گیا کہ مشرا کو اس بات کا پابند کیا گیا ہے کہ وہ چارمینار کے قریب گائے کے ساتھ نہ بیٹھے ۔ پولیس سے مزید استفسار پر یہ پتہ چلا کہ مشرا اپنی گائے کے ساتھ چارمینار ٹیلی فون ایکسچینج کی عمارت کے قریب بیٹھ رہا ہے جو سردار محل کے روبرو واقع ہے ۔ اس معاملہ میں پولیس کی جتنی ستائش کی جائے کم ہے کیوں کہ اس رپورٹ کا مثبت انداز میں جائزہ لیتے ہوئے مشرا کو تاریخی چارمینار سے منتقل کردیا ۔ یہاں اس بات کا تذکرہ بھی ضروری ہے کہ اخبار سیاست میں اکثر کسی نہ کسی متنازعہ معاملے کی رپورٹس پیش کی جاتی رہی ہیں جن کے ہمیشہ مثبت اثرات سامنے آئے ہیں ۔ مشرا کے مذہب یا گائے کی مخالفت کرنا مقصد نہیں رہا بلکہ تاریخی اہمیت کے حامل چارمینار کے قریب ایسا کرنا مناسب معلوم نہیں ہورہا تھا ۔ پولیس کے مطابق اب مشرا کو پابند کردیا گیا ہے کہ وہ چارمینار کے پاس نہ بیٹھے جس کا ثبوت زیر نظر تصویر ہے ۔ اگر پرنٹ میڈیا کے ذریعہ کسی متنازعہ واقعہ کو منظر عام پر لایا جاتا ہے اور پولیس بھی بروقت کارروائی کرتی ہے تو سیکولرازم پر ہمارا عقیدہ مزید مضبوط ہوجاتا ہے ۔ بلالحاظ مذہب و ملت ، متنازعہ معاملات کو منظر عام پر لانا ہی پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کی ذمہ داری ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT