Thursday , December 14 2017
Home / ہندوستان / تاملناڈو میں حملوں کی سازش ، داعش کا مشتبہ سرغنہ گرفتار

تاملناڈو میں حملوں کی سازش ، داعش کا مشتبہ سرغنہ گرفتار

نئی دہلی ۔18 ستمبر۔( سیاست ڈاٹ کام) نیشنل انوسٹی گیشن ایجنسی نے خوفناک جہادی تنظیم آئی ایس آئی ایس کے ایک مشتبہ کارندہ شیخ الحمید کو ٹاملناڈو کے مختلف حصوں میں حملوں کی سازش میں مبینہ طورپر ملوث ہونے کے ضمن میں آج چینائی میں گرفتار کرلیا ۔ مرکزی تحقیقاتی ادارہ نے اپنے بیان میں کہاکہ ممنوعہ دہشت گرد تنظیم کیس رگرمیوں کو وسعت دینے کی غرض سے حملے کرنے کی سازش بنانے کے الزام کے تحت شیخ الحمید اور دیگر آٹھ ملزمین کے ساتھ گرفتار کرلیا گیا ۔ این آئی اے پولیس اسٹیشن نے دہلی میں 26 جنوری کو 9ملزمین کے خلاف ازخود ایک مقدمہ درج کیا تھا ۔ قومی تحقیقاتی ادارہ نے اپنے بیان میں کہا کہ ’’ممنوعہ دہشت گرد تنظیم دولت اسلامیہ شام و عراق (داعش ) کی سرگرمیوں کو وسعت دینے کے ارادہ سے ملزمین اور ان کے معاونین نے 2013 ء سے سازش تیار کی تھی اور دہشت گرد ٹولیاں تشکیل دی گئی تھیں جو فنڈس جمع کررہی تھیں ، اجلاسوں کا اہتمام کرنے کے علاوہ بھرتیوں کے ذریعہ چند افراد کی داعش میں شمولیت کیلئے شام کے سفر کا انتظام کررہی تھیں‘‘۔ دوران تحقیقات یہ انکشاف بھی ہوا ہے کہ اصل ملزم حاجی فخرالدین جو ہندوستانی نژاد سنگاپوری شہری ہے اور ٹاملناڈو کے کوڈالور ضلع کا متوطن ہے جنوری 2014 ء میں اپنے خاندان کے ساتھ شام پہونچکر داعش میں شامل ہوگیا تھا۔ فخرالدین نے نومبر 2013ء اور جنوری 2014 ء کے درمیان دو مرتبہ ہندوستان کاسفر بھی کیا تھا ۔ اس نے معاون ملزمین خواجہ معین الدین ، شیخ الحمید اور دوسروں کے ساتھ داعش میں بھریتوں کے ارادہ سے ٹاملناڈو اور کرناٹک کے مختلف مقامات پر اجلاسوں کا اہتمام بھی کیا تھا ۔ اس سازش کے ایک حصہ کے طورپر شیخ الحمید ترکی کے راستہ سے شام میں آئی ایس آئی ایس کے زیرکنٹرول علاقہ میں پہنچنے کیلئے اگسٹ 2015 ء میں روانہ ہوا تھا لیکن ترکی کے حکام نے اس کو روکنے کے بعد ہندوستان کے حوالہ کردیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT