Wednesday , December 19 2018

تبت کو چین سے علیحدگی نہیں، ترقی مطلوب : دلائی لاما

کولکاتا 23 نومبر (سیاست ڈاٹ کام) تبتی روحانی رہنما دلائی لاما نے آج کہاکہ تبت کو چین سے آزادی کی فکر نہیں بلکہ وہ عظیم تر ترقی چاہتا ہے۔ اُنھوں نے یہاں انڈین چیمبر آف کامرس کے زیراہتمام ایک ایونٹ میں کہاکہ چین اور تبت کا گہرا رشتہ ہے، یہ اور بات ہے کہ وقفہ وقفہ سے جھگڑے ہوتے رہے ہیں۔ بہرحال ماضی تو ماضی ہے۔ ہم مستقبل پر نظر رکھنا چاہیں گے۔ اُنھوں نے زور دیا کہ تبتی لوگ چین کے ساتھ برقرار رہنے کے خواہشمند ہیں۔ ہم آزادی کا مطالبہ نہیں کررہے ہیں ہم تو چین کے ساتھ ہی رہنا چاہتے ہیں لیکن ہمیں ترقی چاہئے۔ دلائی لاما نے کہاکہ چین کو تبتی ثقافت اور ورثہ کا احترام ضرور کرنا چاہئے۔ تبت کا مختلف کلچر اور مختلف انداز ہے۔ چینی لوگوں کو اُن کا اپنا وطن پیارا ہے۔ ہم ہمارے وطن کو عزیز رکھتے ہیں۔ اُنھوں نے یہ دعویٰ کیاکہ کوئی بھی چائینی کو معلوم نہیں کہ گزشتہ چند دہوں میں کیا کچھ پیش آیا لیکن یہ ملک اِن تمام برسوں میں تبدیل ہوا ہے۔ اب جبکہ چین دنیا کے ساتھ گھل مل رہا ہے، یہ اپنے ماضی کے مقابل 40 تا 50 فیصد تک تبدیل ہوچکا ہے۔

TOPPOPULARRECENT