Saturday , April 21 2018
Home / شہر کی خبریں / تجارتی اداروں کیلئے لائسنس کا حصول لازمی

تجارتی اداروں کیلئے لائسنس کا حصول لازمی

م31 مارچ تک تجدید کی سہولت ، مابعد 50 فیصد اضافی ٹیکس
حیدرآباد۔/23جنوری، ( سیاست نیوز) شہر حیدرآباد میں موجود تجارتی اداروں کے لائسنس کی تجدید اور نئے لائسنس کے حصول کے ذریعہ ہی کاروبار کئے جائیں۔ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد نے شہر حیدرآباد میں تجارت کرنے والے تمام اداروں کو ہدایت جاری کی ہے کہ وہ 31 مارچ سے قبل اپنے تجارتی لائسنس کی تجدید کروالیں اور جو ادارے تجارتی لائسنس نہیں رکھتے وہ نئے تجارتی لائسنس حاصل کرلیں۔ جی ایچ ایم سی کی جانب سے جاری کردہ ہدایات میں اس بات کی وضاحت کی گئی ہے کہ 31 مارچ کے بعد تجارتی لائسنس کی تجدید کیلئے موصول ہونے والی درخواستوں پر 50 فیصد اضافی فیس عائد کی جائے گی اور تجارتی اداروں کے مالکین سے جرمانہ بھی وصول کیا جائے گا۔ دونوں شہروں حیدرآباد و سکندرآباد کے تجارتی اداروں کے لائسنس کی تجدید کاری کیلئے بلدیہ نے 31 مارچ تک کی مہلت مقرر کی ہے تاکہ قبل از وقت تجارتی ادارے اپنے لائسنس تجدید کروالیں اور انہیں تجارت میں کوئی رکاوٹ پیدا نہ ہونے پائے۔ واضح رہے کہ مجلس بلدیہ نے گزشتہ ہفتہ تجارتی لائسنس نہ رکھنے والے اداروں کے خلاف مہم شروع کرکے انہیں مہربند کرنے کا منصوبہ تیار کیا ہے۔ جی ایچ ایم سی کمشنر ڈاکٹر جناردھن ریڈی نے اپنے ماتحتین کے علاوہ تمام زونل کمشنرس کو ہدایت دی کہ وہ بلدی حدود میں موجود تجارتی اداروں کے لائسنس کی تنقیح کو یقینی بنائیں اور جن اداروں کے لائسنس کی مدت ختم ہورہی ہے انہیں لائسنس کی تجدید کی ترغیب دیں اور جو ادارے بغیر لائسنس کے تجارت کررہے ہیں ان کے خلاف سخت کارروائی کو یقینی بنایا جائے۔ باوثوق ذرائع سے موصولہ اطلاع کے مطابق جی ایچ ایم سی نے آمدنی میں اضافہ کیلئے جو منصوبہ تیار کیا ہے اسی منصوبہ کے تحت شہریوں سے جائیداد ٹیکس کے علاوہ تجارتی لائسنس کی تجدید اور اجرائی کا عمل بھی تیز کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے تاکہ بلدیہ کی آمدنی کا جو نشانہ مقرر کیا گیا ہے اسے پورا کیا جاسکے۔

TOPPOPULARRECENT