Monday , November 20 2017
Home / شہر کی خبریں / تجارت کو آسان بنانے مرکزی حکومت کی نئی حکمت عملی

تجارت کو آسان بنانے مرکزی حکومت کی نئی حکمت عملی

دہلی اور ممبئی میں بہت جلد آغاز ، اندرون چار یوم تجارتی کارروائیوں کی تکمیل کا منصوبہ
حیدرآباد۔11جنوری(سیاست نیوز) حکومت ملک میں تجارت کو آسان بنانے کے امور پر مارچ 2017سے نئی حکمت عملی اختیار کرتے ہوئے اندرون 4یوم تمام اجازت ناموں کی اجرائی کے اقدامات کی منصوبہ بندی کررہی ہے۔مرکزی حکومت کی جانب سے کئے جانے والے ان اقدامات کا آغاز ابتدائی طور پر دہلی اور ممبئی میں کیا جائے گا جہاں تجارت کے آغاز کیلئے سب سے کم ایام درکار ہیں اور ماہ مارچ کے دوران اندرون 4یوم تمام کاروائیوں کو مکمل کرنے کے اقدامات کی منصوبہ بندی کی جا رہی ہے اور ان دو شہروں میں منصوبہ کامیاب ہونے کی صورت میں اس منصوبہ کو ملک کے دیگر شہروں تک وسعت دی جائے گی۔ بتایا جاتا ہے کہ مجموعی اعتبار سے دہلی اور ممبئی نئی تجارت کے آغاز کیلئے 26دن درکار ہیں اور ان میں مختلف امور کیلئے علحدہ علحدہ وقت لگتا ہے۔مرکزی وزارت کامرس کی جانب سے کئے جانے والے اقدامات کے تحت بتایا جاتا ہے کہ حکومت کی جانب سے ویاٹ رجسٹریشن‘ ای ایس آئی سی رجسٹریشن کے علاوہ انکم ٹیکس اکاؤنٹ کے لئے مدت میں تخفیف کے علاوہ دیگر امور و لائسنس کی اجرائی کے وقت میں کمی کے متعلق اقدامات کئے جا رہے ہیں۔بلدیاتی دفاتر سے جاری کئے جانے والے اجازت ناموں کے علاوہ ریاستی حکومت کی سطح پر جاری کئے جانے والے اجازت ناموں کے وقت کو بھی کم کرنے کیلئے مشاورت جاری ہے اور بتایا جاتا ہے کہ مرکزی حکومت سنگل ونڈو کے ذریعہ تمام امور کی انجام دہی کے تجربہ کومدنظر رکھتے ہوئے یہ اقدامات کر رہی ہے۔ عالمی سطح پر مختلف ممالک میں نئی تجارت کے آغاز کیلئے کئے گئے 189ممالک کے سروے میں ہندستان کو 131واں مقام حاصل ہوا تھا جس میں بہتری کیلئے حکومت کوشاں ہے۔ عالمی بینک کی جانب سے کی گئی رینکنگ میں ہندستان کو 151واں رینک حاصل تھا لیکن گذشتہ ایک برس کے دوران اس میں گراوٹ ریکارڈ کی گئی ہے جس کے سبب اب ہندستان عالمی بینکنگ کی رینکنگ میں 155ویں مقام پر ہے۔ ڈپارٹمنٹ آف انڈسٹریل پالیسی اینڈ پروموشن کی جانب سے کئے جانے والے ان اقدامات کے متعلق بتایا جاتا ہے کہ اس منصوبہ کے تحت نہ صرف بڑے صنعتکاروں کو اجازت ناموں کی اجرائی میں سہولت کی فراہمی کے اقدامات کئے جائیں گے بلکہ چھوٹے صنعتکاروں کو بھی متعدد سہولتوں کی فراہمی کے متعلق منصوبہ بندی کی جا رہی ہے تاکہ ملک میں تجارت کو آسان بنانے کے اقدامات کو ممکن بناتے ہوئے نہ صرف عالمی رینکنگ میں بہتری لائی جا سکے۔

TOPPOPULARRECENT