Saturday , June 23 2018
Home / شہر کی خبریں / تحصیلدار کرپائیں گے جائیدادوں کا رجسٹریشن ؟

تحصیلدار کرپائیں گے جائیدادوں کا رجسٹریشن ؟

حکومت کے فیصلہ پر ڈپٹی چیف منسٹر محمد محمود علی سے ارکان اسمبلی کا استفسار

حیدرآباد۔14مارچ(سیاست نیوز) حکومت تلنگانہ نے تحصیلداروں کے ذریعہ جائیدادوں کے رجسٹریشن کا فیصلہ کیا ہے اور اس فیصلہ کا اطلاق مکمل ریاست پر ہوگا ۔ ڈپٹی چیف منسٹر جناب محمد محمود علی ،آج تلنگانہ قانون ساز کونسل میں ارکان قانون ساز کونسل جناب محمد فرید الدین‘ ڈاکٹر پی راجیشور ریڈی ‘ مسٹر این لکشمن راؤ کی جانب سے کئے گئے استفسار کا جواب دے رہے تھے۔ ان ارکان قانون ساز کونسل نے حکومت سے استفسار کیا تھا کہ آیا حکومت نے ایسا کوئی فیصلہ کیا ہے کہ تحصیلداروں کے ذریعہ جائیدادوں کے رجسٹریشن کا عمل انجام دیا جائے گا؟ اگر ایسا فیصلہ کیا گیاہے تو اس کے خد و خال کیا ہوں گے اورکب تک اس فیصلہ پر عمل آوری کو یقینی بنانے کے احکامات جاری کئے جانے کی توقع ہے۔ جناب محمد محمود علی نے کونسل کو حکومت کے فیصلہ سے واقف کرواتے ہوئے کہا کہ ریاستی حکومت نے تحصیلداروں کو رجسٹریشن کے اختیارات دینے کا فیصلہ کیا ہے اور اس منصوبہ کو عملی جامہ پہنانے کے اقدامات کئے جارہے ہیں اور بہت جلد اس منصوبہ کو قطعیت دے دی جائے گی۔ جناب محمد محمودعلی نے بتایا کہ ریاستی حکومت کی جانب سے اراضیات کے ریکارڈس کو باقاعدہ و شفاف بنانے کے عمل کے دوران اس بات کا فیصلہ کیا ہے اور اس منصوبہ پر مشاورت ‘ تربیت اور مذاکرات کا عمل جاری ہے ۔ انہوں نے ایک اور سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ ریاست میں 10ہزار823ریوینیو مواضعات ہیں جن میں 78لاکھ 67ہزار 173کھاتہ ہیں ۔ جناب محمد محمود علی ڈپٹی چیف منسٹرتلنگانہ و ریاستی وزیر مال ارکان قانون ساز کونسل مسٹر پی سدھاکر ریڈی ‘ مسٹر وی بھوپال ریڈی ‘ مسٹر بی وینکٹیشورلو کی جانب سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں ان تفصیلات کو پیش کرتے ہوئے کہا کہ ان مواضعات میں جملہ 20لاکھ 97ہزار 459ایکڑ 03گنٹا اراضی سرکاری ہے جو حکومت کے قبضہ میں ہے۔ ریاستی وزیر مال نے بتایا کہ اراضیات و جائیدادوں کے ریکارڈس کو شفاف بنانے کے عمل کے دوران 72لاکھ 12ہزار 111جائیدادوں کے ریکارڈس کو درست کیا گیا اور ان ریکارڈس کی درستگی اور ان میں شفافیت لانے کا عمل ابھی جاری ہے۔ جناب محمد محمود علی نے کہا کہ اراضیات کے ریکارڈس کو درست کرنے کیلئے چلائی گئی خصوصی مہم کے دوران جو ریکارڈس موصول ہوئے ہیں ان میں 6لاکھ 55ہزار 062 ریکارڈس کی درستگی کا عمل جاری ہے اور ان کی درستگی کو بھی جلد مکمل کرلیا جائے گا۔ انہوں نے ان سوالات کے دوران ارکان قانون ساز کونسل کی جانب سے اٹھائے گئے ذیلی سوالات کے جواب بھی دیئے ۔

TOPPOPULARRECENT