Wednesday , December 12 2018

تحفظات اور اقلیتی بجٹ کے نام ٹی آر ایس حکومت کا مسلمانوں کو دھوکہ

تحریک عدم اعتماد سے لاتعلقی کا اظہار مودی پر اعتماد کے مترادف، علی مسقطی کا ردعمل

حیدرآباد۔18مارچ(سیاست نیوز) چیف منسٹر آندھرا پردیش و صدر تلگو دیشم پارٹی مسٹر این چندرا بابو نائیڈو کی جانب سے مودی حکومت کے خلاف پیش کردہ تحریک عدم اعتماد سے لاتعلقی کا اعلان کرتے ہوئے تلنگانہ راشٹر سمیتی نے ثابت کردیا ہے کہ وہ ملک میں مودی کے اقتدار سے مطمئن ہے اور آئندہ کسی بھی وقت این ڈی اے میںشمولیت اختیار کرسکتی ہے۔ جناب علی مسقطی نائب صدر تلنگانہ تلگو دیشم پارٹی نے ٹی آر ایس کے موقف پر شدید تنقید کرتے ہوئے یہ بات کہی اور کہا کہ ریاست تلنگانہ میں برسر اقتدار چندرشیکھر راؤ حکومت مسلم دوست ہونے کا دکھاوا کررہی ہے اور عملی اقدام کے وقت فرار اختیار کرتے ہوئے یہ ثابت کررہی ہے کہ اسے مسلمانوں سے کوئی ہمدردی نہیں ہے بلکہ وہ بھارتیہ جنتا پارٹی کے نظریات کو قبول کئے ہوئے ہے۔ جناب علی مسقطی نے اپنے بیان میں کہا کہ چیف منسٹر آندھرا پردیش و صدر تلگو دیشم پارٹی نے قومی مفادات کو ذاتی مفادات پر ترجیح کبھی نہیں دی بلکہ جب کبھی قومی مفاد کے تحفظ کا مسئلہ پیدا ہوا انہوں نے اقتدار کی پرواہ کئے بغیر ملک کے جمہوری و سیکولرکردار کو بچانے کے لئے قومی سیاست میں کلیدی کردار ادا کیا ہے۔ انہوں نے بتایاکہ تلگو دیشم پارٹی واحد ایسی سیاسی جماعت ہے جس نے طلاق ثلاثہ مسئلہ پر این ڈی اے کا حصہ رہتے ہوئے بل کی مخالفت کی تھی اور حکومت سے بل میں ترمیم کا مطالبہ کیا تھا لیکن اس وقت بھی تلنگانہ راشٹر سمیتی نے جو این ڈی کا حصہ بھی نہیں تھی لیکن ایوان سے غیر حاضر رہتے ہوئے بھارتیہ جنتا پارٹی کی مدد کرتے ہوئے یہ ثابت کرنے کی کوشش کی کہ وہ بی جے پی کے نظریات کی تائید کرتی ہے ۔ اسی طرح اب جبکہ تلگو دیشم پارٹی کی جانب سے مودی حکومت کے خلاف پیش کی گئی تحریک عدم اعتماد کی مختلف سیاسی جماعتوں کی جانب سے تائید کی جا رہی ہے ایسے وقت میں غیر کانگریس و غیر بی جے پی قومی اتحاد کی تشکیل کے اعلانات کرنے والے چیف منسٹر تلنگانہ مسٹر کے چندر شیکھر راؤ تحریک عدم اعتماد سے خود کو دور رکھتے ہوئے بھارتیہ جنتا پارٹی کی بالواسطہ مدد کرر ہے ہیں۔ جناب علی مسقطی نے کہا کہ اگر تلنگانہ راشٹر سمیتی مسلمانوں کی حقیقی ہمدرد ہے تو اسے مودی حکومت کے خلاف پلے کارڈس اور بیانرس پکڑنے کا دکھاوا کرنے کے بجائے حکومت کے خلاف پیش کی گئی تحریک عدم اعتماد کا ساتھ دینا چاہئے ۔انہوں نے کہا کہ تحفظات اور اقلیتی بجٹ کے نام پر ٹی آر ایس تلنگانہ کے مسلمانو ںکو مزید دھوکہ نہیں دے سکتی ۔

TOPPOPULARRECENT