Tuesday , August 21 2018
Home / شہر کی خبریں / تحفظات نہیں تو کے سی آر ووٹ بھی نہ مانگیں : محمد علی شبیر

تحفظات نہیں تو کے سی آر ووٹ بھی نہ مانگیں : محمد علی شبیر

وزیراعظم مودی دستوری ترمیم کیلئے تیار نہیں ، چیف منسٹر کا وعدہ پورا کیسے ہوگا
حیدرآباد۔ 16 نومبر (سیاست نیوز) قائد اپوزیشن تلنگانہ قانون ساز کونسل نے 12% مسلم تحفظات کے مسئلہ پر مسلمانوں کے جذبات سے کھلواڑ کرنے کے بجائے 2019ء تک 12% مسلم تحفظات کی عدم فراہمی پر ووٹ نہ مانگنے کا اعلان کرنے کا چیف منسٹر کے سی آر سے مطالبہ کیا۔ سپریم کورٹ کی جانب سے حکومت راجستھان کو 50% تحفظات کے کوٹہ کو عبور نہ کرنے کے جاری کردہ احکامات کے بعد آج اسمبلی کے میڈیا پوائنٹ پر خطاب کرتے ہوئے محمد علی شبیر نے کہا کہ مشن بھاگیرتا اسکیم کا ٹی آر ایس کے انتخابی منشور میں کوئی وعدہ بھی نہیں کیا گیا پھر بھی اس اسکیم کو چیلنج کے طور پر قبول کرتے ہوئے چیف منسٹر نے گھر گھر نلوں کے ذریعہ پینے کے پانی کو نہ پہونچنے کی صورت میں عوام سے ووٹ نہ مانگنے کا اعلان کیا ہے جبکہ 12% مسلم تحفظات ٹی آر ایس کے انتخابی منشور میں شامل ہے۔ کیا چیف منسٹر کے سی آر اس موقف میں ہیں کہ وہ 12% مسلم تحفظات فراہم نہ کرنے کی صورت 2019ء کے عام انتخابات میں ووٹ مانگنے عوام سے رجوع نہیں ہوں گے۔ اس پر چیف منسٹر تلنگانہ اپنے موقف کا واضح اعلان کریں۔ اسمبلی اور کونسل میں 12% مسلم تحفظات کی کانگریس پارٹی نے بھرپور تائید کی ہے۔ اسمبلی کے جاریہ سرمائی سیشن میں اقلیتی بہبود کے مختصر مباحث میں حصہ لیتے ہوئے دوبارہ چیف منسٹر کے سی آر نے 12% مسلم تحفظات کیلئے وزیراعظم نریندر مودی سے مثبت ردعمل کا اظہار ہونے کا دعویٰ کیا۔ مرکز سے نااُمیدی ہوئی تو سپریم کورٹ سے رجوع ہونے کا بھی اسمبلی میں اعلان کیا ہے۔ سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ راجستھان میں گجر ، ہریانہ میں جاٹ، گجرات میں پاٹیدار طبقات کو حکومتوں کی جانب سے دیئے گئے تحفظات کو مقامی ہائیکورٹس نے کالعدم قرار دیا۔ قابل غور بات یہ ہے کہ ان تینوں ریاستوں میں بی جے پی کی حکومتیں ہیں۔ وزیراعظم نریندر مودی بی جے پی کی جانب سے تینوں ریاستوں میں کئے گئے وعدوں کو پورا کرنے کیلئے دستور میں ترمیم کرنے کیلئے تیار نہیں ہے اور وہ تلنگانہ میں ٹی آر ایس حکومت کی جانب سے کئے گئے وعدے اور وہ بھی مسلم تحفظات کیلئے دستور میں ترمیم کرنے کیلئے رضامند ہوں گے۔ چیف منسٹر تلنگانہ مسلمانوں کو نادان سمجھنے کی غلطی نہ کریں اور گمراہ کرنے کی بھول بھی نہ کریں۔ سپریم کورٹ کے راجستھان سے متعلق تازہ فیصلے کے بعد کے سی آر کیلئے عدلیہ کے دروازے بھی بند ہوگئے ہیں۔ جھوٹ کا سہارا لیتے ہوئے چیف منسٹر مسلمانوں کے جذبات سے کھلواڑ کرنے کا سلسلہ بند کردیں۔ اگر 12% مسلم تحفظات فراہم کرنے کیلئے سنجیدہ ہیں تو فوری جی او جاری کرتے ہوئے اس پر عمل کرنے کا مطالبہ کیا۔ بی جے پی سے میچ فکسنگ کرتے ہوئے مسلمانوں کو دھوکہ دینے کا ٹی آر ایس حکومت پر الزام عائد کیا۔

TOPPOPULARRECENT