Tuesday , November 21 2017
Home / Top Stories / تحفظات کے فیصد میں اضافہ کا فیصلہ مناسب وقت پر کیا جائے گا

تحفظات کے فیصد میں اضافہ کا فیصلہ مناسب وقت پر کیا جائے گا

مسلمانوں اور درج فہرست قبائل کی صورتحال سے متعلق کمیشنوں کی رپورٹ کا حکومت کو انتظار : چیف منسٹر
حیدرآباد۔/12مارچ ، ( سیاست نیوز) چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ نے کہا کہ حکومت تلنگانہ میں مسلمانوں اور درج فہرست قبائل کو تحفظات کے فیصد میں اضافہ کی تجویز رکھتی ہے۔ اس سلسلہ میں دونوں طبقات کی تعلیمی، سماجی اور معاشی پسماندگی کا جائزہ لینے کیلئے علحدہ کمیشن قائم کئے گئے ہیں۔ اسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران تلگودیشم، بائیں بازو اور کانگریس ارکان ایس وینکٹ ویریا، آر کرشنیا، ایس راجیا، سمپت کمار، ڈاکٹر گیتا ریڈی، بھٹی وکرامارکا، ومشی چند ریڈی، این بھاسکر راؤ، آر رام موہن ریڈی، کے وینکٹ ریڈی، اجئے کمار، جی چنا ریڈی اور رویندر کمار کے سوال پر چیف منسٹر نے تحریری جواب میں بتایا کہ حکومت نے درج فہرست قبائیل کیلئے کمیشن آف انکوائری 3مارچ 2015کو قائم کیا ہے تاکہ درج فہرست قبائل کی بڑھتی آبادی کے تناظر میں سماجی، معاشی پسماندگی کا جائزہ لیتے ہوئے حکومت کو جامع رپورٹ پیش کی جائے۔ حکومت نے 3مارچ 2015کو مسلمانوں کی تعلیمی، معاشی اور سماجی صورتحال کا جائزہ لیتے ہوئے تحفظات کی سفارش کرنے کیلئے کمیشن آف انکوائری قائم کیاہے۔ چیف منسٹر نے بتایا کہ تحفظات کے فیصد کا فیصلہ مناسب وقت پر کیا جائے گا اور وہ کمیشن آف انکوائری کی رپورٹ کی بنیاد پر ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ کمیشن آف انکوائری تحفظات کی فراہمی کیلئے درج فہرست اقوام اور مسلمانوں کی صورتحال کا جائزہ لے رہا ہے اور دونوں کمیشنوں کا کام تیزی سے جاری ہے۔ انہوں نے بتایا کہ کمیشن آف انکوائری کی میعاد 31مارچ 2016کو ختم ہوگی اور حکومت کو رپورٹ کا انتظار ہے۔ واضح رہے کہ ٹی آر ایس سربراہ کے چندر شیکھر راؤ نے انتخابی مہم کے دوران مسلمانوں اور درج فہرست قبائل کو  12  فیصد تحفظات کی فراہمی کا اعلان کیا تھا۔ مسلمانوں کی پسماندگی کا جائزہ لینے کیلئے قائم کردہ سدھیر کمیشن آف انکوائری کو ابتدائی چھ ماہ تک بنیادی سہولتیں فراہم نہیں کی گئیں اور پہلی توسیع کے بعد کمیشن نے اپنی کارکردگی کا باقاعدہ آغاز کیا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ 31مارچ تک رپورٹ پیش کرنا کمیشن کیلئے ممکن نہیں کیونکہ سرکاری محکمہ جات سے جو اعداد و شمار طلب کئے گئے تھے وہ ابھی تک کمیشن کو حاصل نہیں ہوئے ہیں۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT