Saturday , December 15 2018

تحویل اراضی آرڈیننس پر کانگریس کو تنقید کا حق نہیں

جمہوریت کے قتل کے الزام پر مرکزی وزیر وینکیا نائیڈو کا شدید ردعمل

جمہوریت کے قتل کے الزام پر مرکزی وزیر وینکیا نائیڈو کا شدید ردعمل
نئی دہلی۔/21اپریل، ( سیاست ڈاٹ کام ) تحویل اراضی بل پر حکومت کے خلاف گمراہ کن مہم چلانے کا کانگریس پر الزام عائد کرتے ہوئے بی جے پی نے آج آرڈیننس کے مسئلہ پر اپوزیشن کی تنقیدوں کو جیسے شیطان مقد س آیات کا حوالہ دے رہاہو سے تعبیر کیا ہے۔ سابق کانگریس حکومت کے ریکارڈس کھنگالتے ہوئے حکمران پارٹی نے کہا کہ اس وقت ریکارڈ مقدار میں آرڈیننس جاری کئے گئے تھے اور اپوزیشن جماعتوں کو یہ حق نہیں ہے کہ حکومت پر جمہوریت کے قتل کا الزام عائد کریں۔ بی جے پی نے اپنے ارکان پارلیمنٹ کو پیشرو حکومت کے جاری کردہ آرڈیننس کے ریکارڈ حوالے کئے اور کہا کہ ان لوگوں کو سب سے پہلے بے نقاب کریں جوکہ اراضی بل کی پارلیمنٹ میں پیشکشی پر تنقید یں کررہے ہیں۔ وزیر پارلیمانی امور مسٹر ایم وینکیا نائیڈو نے کہا کہ آرڈیننس کے طریقہ کار پر کانگریس کی تنقیدیں ایسی ہیں جیسے کہ شیطان مقدس آیات کا حوالہ دے رہا ہو اور اس کا ریکارڈ بھی انتہائی خراب رہا۔ جس نے سینکڑوں آرڈیننس جاری کئے تھے اور گزشتہ 50سال کے دوران 456 آرڈیننس کی اجرائی عمل میں آئی تھی۔ مرکزی وزیر نے تفصیلات پیش کرتے ہوئے بتایا کہ جواہر لال نہرو کے دور حکومت میں 77آرڈیننس ، اندرا گاندھی کے 6سالہ دور حکومت میں 76آرڈیننس اور راجیو گاندھی کے دور حکومت میں 35آرڈیننس جاری کئے گئے تھے۔ علاوہ ازیں سی پی ایم کی حمایتی یونائٹیڈ فرنٹ حکومت نے ہر ماہ 3آرڈیننس کے حساب سے جملہ 77 آرڈیننس جاری کئے۔

TOPPOPULARRECENT