Tuesday , December 11 2018

تدریسی نصاب میں بی جے پی فرقہ پرست جماعت

اگرتلہ ۔ 17 مارچ ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) بائیں بازو محاذ زیراقتدار ریاست تریپورہ میں نویں جماعت کی تدریسی کتاب میں مبینہ طورپر بی جے پی کو فرقہ پرست قرار دیا گیاہے۔بی جے پی نے الیکشن کمیشن سے اس کی شکایت کی ۔ چیف الیکٹورل آفیسر اشوتوش جندل نے بتایا کہ بی جے پی سے شکایت موصول ہوئی ہے جس پر ریاستی ایجوکیشن ڈپارٹمنٹ سے جواب طلب کیا گیا ہے ۔ ان

اگرتلہ ۔ 17 مارچ ۔ ( سیاست ڈاٹ کام ) بائیں بازو محاذ زیراقتدار ریاست تریپورہ میں نویں جماعت کی تدریسی کتاب میں مبینہ طورپر بی جے پی کو فرقہ پرست قرار دیا گیاہے۔بی جے پی نے الیکشن کمیشن سے اس کی شکایت کی ۔ چیف الیکٹورل آفیسر اشوتوش جندل نے بتایا کہ بی جے پی سے شکایت موصول ہوئی ہے جس پر ریاستی ایجوکیشن ڈپارٹمنٹ سے جواب طلب کیا گیا ہے ۔ انھوں نے کہا کہ رپورٹ ملنے کے بعد اسے موزوں کارروائی کیلئے الیکشن کمیشن روانہ کیا جائے گا ۔ بی جے پی انٹیلکچول سیل کے کنوینر پرسن جیت چکرورتی نے چیف الیکشن کمشنر وی ایس سمپت سے کل یہ شکایت کی تھی کہ بنگالی میڈیم کی پولیٹکل سائینس کتاب میں ایک باب ہندوستان کے پارٹی سسٹم پر ہے جس میں یہ کہا گیا ہے کہ یہ سسٹم کی سب سے نمایاں خصوصیت فرقہ پرست جماعتوں کا وجود ہے ۔ مسلم لیگ ، ہندو مہاسبھا اور شیوسینا بھی ان ہی جماعتوں میں سے ایک ہے ۔ بی جے پی جیسی جماعت جو مذہبی بنیادوں پر اگرچہ قائم نہیں کی گئی لیکن وہ فرقہ پرستانہ سیاست کے ذریعہ اقتدار حاصل کرنے میں کامیاب رہی ہے ۔ چکرورتی نے یہ بھی دعویٰ کیا کہ اس کتاب کی بنیاد پر اسکول میں طلبہ سے یہ سوال کیا گیا تھا کہ وہ چار جماعتوں کانگریس ، سی پی ایم ، بی جے پی اور بی ایس پی میں سے فرقہ پرست جماعت کی نشاندہی کریں۔

TOPPOPULARRECENT