Sunday , January 21 2018
Home / ہندوستان / ترکاریاںسستی ہوگئیں، 8 ماہ میں پہلی بار افراط زر میں کمی

ترکاریاںسستی ہوگئیں، 8 ماہ میں پہلی بار افراط زر میں کمی

غذائی اجناس کی قیمتیں برقرار، پیاز اور آلو کی قیمتوں میں اضافہ، پھل سستے

غذائی اجناس کی قیمتیں برقرار، پیاز اور آلو کی قیمتوں میں اضافہ، پھل سستے
نئی دہلی 14 فبروری (سیاست ڈاٹ کام) عام آدمی کو راحت رسانی کرتے ہوئے جنوری میں افراط زر آٹھ ماہ میں پہلی بار کم ہوکر 5.05 فیصد ہوگیا۔ جس سے غذائی اجناس کی قیمتیں اعتدال پر آگئیں۔ مسلسل دوسرے ماہ افراط زر میں کمی دیکھی گئی۔ تھوک فروشی کی قیمتوں کے عشاریہ میں کمی سے ریزرو بینک نے بھی اطمینان کی سانس لی جو بڑھتی ہوئی قیمتوں پر قابو پانے کی جدوجہد میں مصروف تھا۔ ہول سیل قیمتوں کے عشاریہ کے بموجب ڈسمبر میں افراط زر 6.16 ہوگیا تھا۔ جنوری میں افراط زر میں سست رفتار کمی واقع ہوئی۔ تاہم تھوک فروشی کی قیمتوں میں 4.58 فیصد اضافہ ہوا۔ جنوری میں غذائی اجناس کی قیمتوں میں 8.8 فیصد کمی واقع ہوئی لیکن بحیثیت مجموعی اطمینان بخش بارش اور زرعی پیداوار کے باوجود غذائی اجناس کا افراط زر برقرار رہا کیونکہ طلب اور رسد میں خلیج موجود تھی اور سربراہی کے سلسلہ سے متعلق کئی مسائل درپیش تھے۔ پیاز کی قیمتوں میں ڈسمبر کی بہ نسبت 6.59 فیصد اور آلو کی قیمتوں میں 21.73 فیصد اضافہ ہوا۔ پھل سستے ہوگئے۔ لیکن پروٹین سے بھرپور اشیاء جیسے انڈے، گوشت اور مچھلی کے علاوہ دودھ کی قیمتوں میں جنوری میں معمولی سے لے کر 7.22 فیصد تک اضافہ ہوا۔ جاریہ ہفتہ جاری کردہ اطلاعات کے بموجب چلر فروشی کے افراط زر میں کمی ہوئی اور دو سال کے عرصہ میں پہلی بار جنوری میں یہ 8.79 فیصد ہوگیا۔ ڈسمبر میں صنعتی پیداوار 6.6 فیصد تک کم ہوگئی تھی جس کی وجہ سے پیداوار میں اضافہ کے مقصد سے صنعتی شعبہ نے شرح سود میں کمی کا اعلان کیا تھا۔ تھوک فروشی کی قیمتوں کے عشاریہ کے بموجب اشیائے ضروریہ، ایندھن اور برقی توانائی کے شعبہ میں افراط زر 6.84 اور 10.03 فیصد رہا۔ افراط زر پیداواری مصنوعات جیسے شکر اور خوردنی تیل کے شعبہ میں ماہانہ بنیاد پر 2.76 فیصد اضافہ ہوا۔

TOPPOPULARRECENT