Thursday , November 23 2017
Home / عرب دنیا / ترکی اور کرد فوج کی دولت اسلامیہ پر حملوں میں شدت

ترکی اور کرد فوج کی دولت اسلامیہ پر حملوں میں شدت

دوبئی، 24 اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام) کرد فوج نے شمالی عراق میں موصل کے پاس باشکا شہر کو دہشت گرد تنظیم دولت اسلامیہ (آئی ایس) کے قبضے سے چھڑانے کے لیے ان کے ٹھکانوں پر حملے تیز کردیے ہیں۔کرد کمانڈروں کا کہنا ہے کہ انہوں نے آئی ایس کے علاقے میں برتری حاصل کی ہے اور ایک شاہراہ پر قبضہ کر لیا ہے جس کا اثر علاقے میں آئی ایس کی دیگر سرگرمیوں پر پڑے گا۔ ترکی بھی اتوار کو آئی ایس کے خلاف جنگ میں شامل ہو گیا۔ اس سے پہلے عراق کے وزیر اعظم حیدر العبادی نے امریکہ سے کہا تھا کہ وہ نہیں چاہتے ہیں کہ ترکی اس میں شامل ہو۔باشکا شہر میں کرد جنگجوؤں نے آئی ایس کے کئی دہشت گردوں کو ہلاک کردیا ہے ۔ فوج نے آٹھ دیہات کا محاصرہ کر لیا ہے اور موصل میں فوجی مدد پہنچانے کی آئی ایس کی صلاحیت کو ختم کر دیا ہے ۔ عراق میں امریکی فوج کے چیف کمانڈر لیفٹننٹ جنرل اسٹیفن ٹاؤن سینڈ نے نامہ نگاروں سے کہا کہ اتوار کو باشکا میں فوج کو بڑی کامیابی ہاتھ لگی ہے ۔ تاہم انہوں نے ساتھ ہی یہ بھی کہا، ”مجھے اب تک ایسی کوئی رپورٹ نہیں ملی جو بتاتی ہو کہ تمام مکانات محفوظ ہیں۔ آئی ایس کے تمام جنگجو مارے گئے اور سڑک کے کنارے سے تمام بم ہٹائے گئے ”۔ادھر اتحاد فوجیں بھی موصل کے قریب کے علاقوں میں آئی ایس کے ٹھکانوں کو پیچھے دھکیل رہی ہیں۔ کمانڈروں کا کہنا ہے کہ وہ شہر میں نو کلومیٹر تک آگے بڑھ چکے ہیں۔ شہر میں ابھی صحافیوں کو جانے کی اجازت نہیں ہے ۔

TOPPOPULARRECENT