Wednesday , June 20 2018
Home / Top Stories / ترکی کے کسی صدر کا 65 سال بعد دورہ ٔ یونان

ترکی کے کسی صدر کا 65 سال بعد دورہ ٔ یونان

صدر ترکی اردغان کی ائمہ مساجد اور عام مسلمانوں سے ملاقات
ایتھنز۔9 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) ترک صدر رجب طیب اردغان نے کہا ہے کہ اس وقت یونان اور ترکی کے سرمایہ کار ایک دوسرے سے تعاون کرتے ہوئے تیسرے ملک میں مشترکہ طور پر سرمایہ کاری کرکے دونوں ممالک کا مستقبل بہتر بناسکتے ہیں۔ صدر اردغان نے ان خیالات کا اظہار اپنے سرکاری دورۂ یونان کے موقع پر صدر پروکوپیس کی جانب سے ان کے اعزاز میں دینے جانے والے عشائیے کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ ان کا یہ دورہ صدر جلال بایا کے 65 سال قبل کیے جانے والے دورے کے بعد ترکی کے کسی صدر کا پہلا دورہ ہے۔ ہم دراصل ایک دوسرے کے ساتھ گھل مل کرزندگی گزارنے والی اقوام ہیں جن کی تاریخ مشترکہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ ان کے ملک میں ہزاروں کی تعداد میں یونانی باشندے آباد ہیں اور اسی طرح یونان میں ترک باشندے آباد ہیں۔ دونوں اقوام ماضی میں ایک دوسرے کے ساتھ گھل مل کر زندگی بسر کرتے رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اب ہمارا ہدف مستقبل کو مشترکہ طور پر بہتر بنانا ہے۔ ہم آپس میں یکجہتی اور اتحاد کے خواہاں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ایک ایسے وقت میں جب ہم سب نازک دور سے گزر رہے ہیں ہمیں آپس میں اتحاد اور یکجہتی کا مظاہرہ کرتے ہوئے اپنے مستقبل کو سنوارنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ اس وقت توانائی کے میدان میں ا ہم اقدامات اٹھائے جاسکتے ہیں کیوں کہ ترکی توانائی کے ایک مرکز کی حیثیت اختیار کرچکا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یونان نے ہمیشہ ہی ترکی کی یورپی یونین کی مستقل رکنیت کی حمایت کی ہے جسے ہم کبھی بھی فراموش نہیں کرسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مستقبل میں بھی اہم اقدامات اٹھاتے ہوئے تعاون کو جاری رکھ سکتے ہیں خاص طور پر دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ایک دوسرے کا تعاون بہت ضروری ہے۔

TOPPOPULARRECENT