Saturday , November 18 2017
Home / Top Stories / ترک ۔ روس کشیدگی ختم کرنے اردغان ۔ پوتن ملاقات

ترک ۔ روس کشیدگی ختم کرنے اردغان ۔ پوتن ملاقات

باہمی تعلقات میں نیا سنگ میل، ترک صدر کا روسی میڈیا کو انٹرویو
سینٹ پیٹرس برگ۔ 9 اگست (سیاست ڈاٹ کام) ترک صدر رجب طیب اردغان نے آج زور دیا کہ روس کے ساتھ ترکی کے تعلقات دونوں ملکوں کے درمیان باہمی روابط کو معمول پر لائے جانے کے پیش نظر ایک نئے دور میں داخل ہوجائیں گے۔ روسی جیٹ طیارہ کو مار گرائے جانے سے متعلق بحران کے بعد سے پہلی مرتبہ تاریخی دورہ سینٹ پیٹرس برگ کے دوران اردغان نے اپنے روسی ہم منصب ولادیمیر پوتن کا شکریہ ادا کیا کہ انہوں نے 15 جولائی کی ناکام فوجی بغاوت کے دوران ترک حکومت کے موقف کی تائید کی اور ان قائدین میں سے رہے جنہوں نے سب سے پہلے ان سے بات کی۔ روسی صدر پوتن نے بھی کہا کہ دونوں ملکوں کے درمیان روابط کے احیاء سے دونوں مملکتوں کے عوام کو فائدہ پہنچے گا۔ انہوں نے کہا کہ دیسی سیاست کی نہایت مشکل صورتحال کے باوجود آج آپ کا دورہ  یہ ظاہر کرتا ہیکہ ہم تمام مذاکرات کی ازسرنو شروعات چاہتے ہیں اور روس و ترکی کے درمیان تعلقات کی بحالی کے خواہاں ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ وہ 15 جولائی کی ناکام بغاوت کے بعد اردغان سے بات کرنے والے اولین قائدین میں شامل رہے۔ پوتن نے کہا کہ روس تمام اقسام کی باغیانہ کوششوں کا مخالف ہے اور نشاندہی کی کہ انہیں مختلف مسائل بشمول معاشی تعلقات اور انسداد دہشت گردی اقدامات کے بارے میں ترکی کے ساتھ تبادلہ  خیال کا موقع مل رہا ہے۔ اس دوران صدر اردغان نے زور دیا کہ دونوں ملکوں کے درمیان باہمی روابط کی بحالی اس خطہ میں مختلف مسائل کی یکسوئی میں بھی اپنا حصہ ادا کرے گی۔ قبل ازیں اردغان اور ان کے وفد کا سینٹ پیٹرس برگ کے مضافات میں واقع 19 ویں صدی کے کانسٹنٹائن پیالیس میں پرتپاک استقبال کیا گیا۔ اردغان کے ہمراہ متعدد وزراء اور کئی سفارتکار ہیں۔

گولن پر امریکہ کو ترکی کا دوبارہ انتباہ
انقرہ ۔ 9 اگست (سیاست ڈاٹ کام) ترکی نے آج امریکہ کو پھر ایک بار انتباہ دیا کہ پنسلوانیا میں مقیم مبلغ فتح اللہ گولن کی وجہ سے باہمی روابط کو قربان نہ کرے۔ انقرہ 15 جولائی کی ناکام بغاوت کیلئے گولن کو موردالزام ٹھہراتا ہے اور چاہتا ہیکہ اسے مقدمہ کا سامنا کرنے کیلئے امریکہ کی جانب سے حوالہ کردیا جائے۔

TOPPOPULARRECENT