Wednesday , May 23 2018
Home / Top Stories / تریپورہ میں بی جے پی کی جیت نظریاتی کامیابی

تریپورہ میں بی جے پی کی جیت نظریاتی کامیابی

بائیں بازو کو گڑھ میں شکست فاش دینا معمولی کامیابی نہیں : وزیراعظم مودی

نئی دہلی ۔ 6 مارچ ۔( سیاست ڈاٹ کام ) وزیراعظم نریندر مودی نے تریپورہ میں بائیں بازو کے مقابل بی جے پی کی جیت کو ’’نظریہ کی فتح ‘‘ قرار دیا اور کہاکہ پارٹی کو اپنی انتخابی کامیابی کا سلسلہ برقرار رکھنے کیلئے سخت محنت کرنی ہوگی ، وزیر پارلیمانی اُمور اننت کمار نے میڈیا والوں کو یہ بات بتائی ۔ مودی نے بی جے پی پارلیمنٹری پارٹی میٹنگ سے خطاب کیا ، جہاں اُن کا مختلف نعروں کے ساتھ استقبال کیا گیا ۔ جیسے ’’جیت ہماری جاری ہے ، اب کرناٹک کی باری ہے ‘‘ ۔ وزیراعظم نے تین شمال مشرقی ریاستوں تریپورہ ، ناگالینڈ اور میگھالیہ میں بی جے پی کے متاثرکن مظاہرے کے تعلق سے اظہارِ خیال کیا۔ اس میٹنگ میں شریک پارٹی قائدین کے مطابق مودی نے بعض نقادوں کے تبصرے کا حوالہ دیا کہ تریپورہ چھوٹی ریاست ہے جس کی صرف دو لوک سبھا نشستیں ہیں۔ انھوں نے کہاکہ اس کے باوجود بی جے پی کی جیت بڑی اہمیت کی حامل ہے ۔ یہ ریاست طویل عرصہ سے تبدیلی کی منتظر تھی اور عوام نے بائیں بازو کو بیدخل کردیا جو زائد از پچیس سال سے اقتدار میں تھا۔ وزیراعظم نے کہا کہ بی جے پی نے کیرالا میں محض ایک اسمبلی نشست جیتی اور اُس کے بعد دیکھئے کہ بائیں بازو کو اُن کے گڑھ تریپورہ میں شکست فاش دیدی ہے ۔ انھوں نے ادعاء کیا کہ بائیں بازو کی سیاست تشدد اور نفرت کے ساتھ چلتی ہے چنانچہ عوام نے اسے ہر جگہ مسترد کردیاہے ۔ یہ دنیا بھر میں سیاسی اُفق سے غائب ہوتا جارہاہے اور ہندوستان میں بھی اس کا وجود ختم ہوجانے کے دہانے پر ہے کیونکہ اُسے اب صرف کیرالا میں اقتدار حاصل ہے ۔ اننت کمار نے مودی کے حوالے سے کہاکہ تمام تینوں شمال مشرقی ریاستیں اہمیت رکھتی ہیں اور مرکزی حکومت اُن کی ترقی کو ترجیح دے رہی ہے ۔

TOPPOPULARRECENT