Tuesday , December 18 2018

تریپورہ میں 80 ‘ آسام میں 72فیصد رائے دہی

اگرتلہ/گوہاٹی۔7اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) لوک سبھا کے 9مرحلوں کے تحت ہونے والے انتخابات کے پہلے مرحلے کے تحت تریپورہ کے ایک حلقہ میں آج 80فیصد اور آسام کے پانچ حلقوں میں 72فیصد رائے دہی ہوئی ‘ پہلا مرحلہ پوری طرح پُرامن رہا ۔ دونوں ریاستوں میں انتخابی ذرائع نے کہا کہ رائے دہی کی فیصد میں مزید اضافہ ہوسکتاہے۔ آسام کے تیز پور حلقہ میں 73فیصد

اگرتلہ/گوہاٹی۔7اپریل ( سیاست ڈاٹ کام ) لوک سبھا کے 9مرحلوں کے تحت ہونے والے انتخابات کے پہلے مرحلے کے تحت تریپورہ کے ایک حلقہ میں آج 80فیصد اور آسام کے پانچ حلقوں میں 72فیصد رائے دہی ہوئی ‘ پہلا مرحلہ پوری طرح پُرامن رہا ۔ دونوں ریاستوں میں انتخابی ذرائع نے کہا کہ رائے دہی کی فیصد میں مزید اضافہ ہوسکتاہے۔ آسام کے تیز پور حلقہ میں 73فیصد ‘ جوراٹ میں 75فیصد ‘ لکھیم پور میں 67فیصد ‘ ڈیبروگڑھ میں 70فیصد اور کولائی بور میں 72فیصد رائے دہی ریکارڈ کی گئی ۔ تریپورہ کے ایک حلقہ میں 13امیدواروں کے مقدر کا فیصلہ بیالٹ باکس میں مہر بند ہوگیا ۔ اہم امیدواروں میں سی پی آئی ایم کے شنکر پرساد دتا ‘ سی 2ریاستی یونٹ کے سکریٹری ‘ کانگریس کے ارونو دیا‘تریپورہ سنٹرل یونیورسٹی کے سابق وائس چانسلر سدیندرا داس گپتا ‘ بی جے پی کی ریاستی یونٹ کے صدر اور ٹی ایم سی کی ریاستی یونٹ کے چیرمین اور سابق وزیر رتن چکرورتی بھی شامل ہیں ۔1952 اور 2009ء کے درمیان تریپورہ مغربی حلقہ سے15کے منجملہ 10مرتبہ سی پی آئی ایم کے امیدوار کامیاب ہوئے ہیں ۔ 1996ء سے اس حلقہ پر سی پی آئی ایم کا ہی قبضہ برقرار ہے۔

آسام میں مقابلہ کرنے والے 51اہم امیدواروں میں مرکزی وزراء اور کانگریس امیدوار پون سنگھ گھٹووار (ڈیبروگڑھ) اور رانی نارا(لکھیم پور) کے علاوہ سابق وزیر اور کانگریس کے موجودہ رکن پارلیمنٹ بیجوئے کرشنا ہانڈیک( جورہارٹ ) شامل ہیں ۔ دیگر امیدواروں میں چیف منسٹر ترون گوگوئی کے فرزند گورو گوگوئی ( کولائی بور) ‘ کانگریس کے باغی آزاد امیدوار مونی کمار سبااور بی جے پی ریاستی یونٹ کے صدر سبانندا سونووال ( لکھیم پور) شامل ہیں ۔آسام میں 2009ء کے لوک سبھا انتخابات میں کانگریس کو 14کے منجملہ 7نشستوں پر کامیابی حاصل ہوئی تھی اس کی حلیف بی ٹی ایف کو ایک ‘ بی جے پی کو چار ‘ اے آئی یو ڈی ایف کو ایک نشست حاصل ہوئی تھی ۔ آسام میں آج پہلے مرحلے کے تحت تیز پور ‘ کولائی بور ‘ جورہارٹ ‘ ڈیبرو گڑھ اور لکھیم پور میں رائے دہی ہوئی تھی ۔ آسام میں حکمراں کانگریس کو قومی اپوزیشن بی جے پی سے سخت مقابلہ ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT