Wednesday , June 20 2018
Home / ہندوستان / تسلیمہ نسرین کو کولکتہ واپسی کی امید نہیں

تسلیمہ نسرین کو کولکتہ واپسی کی امید نہیں

نئی دہلی ۔ 3 ۔ فروری (سیاست ڈاٹ کام) جاری کولکتہ کتاب میلہ سے اپنی تازہ ترین تصنیف ’’نشدوہ‘‘ کو ہٹادینے اور اس پر امتناع عائد کردینے کے پیش نظر تسلیمہ نسرین نے اندیشہ ظاہر کیا کہ ان کے کولکتہ واپس ہونے کی اب کوئی امید باقی نہیں رہی۔ متنازعہ بنگلہ دیشی مصنف تسلیمہ نسرین نے کہا کہ ایسی تحدیدات مصنف کیلئے ’’حقیقی موت‘‘ سے کم نہیں ہے

نئی دہلی ۔ 3 ۔ فروری (سیاست ڈاٹ کام) جاری کولکتہ کتاب میلہ سے اپنی تازہ ترین تصنیف ’’نشدوہ‘‘ کو ہٹادینے اور اس پر امتناع عائد کردینے کے پیش نظر تسلیمہ نسرین نے اندیشہ ظاہر کیا کہ ان کے کولکتہ واپس ہونے کی اب کوئی امید باقی نہیں رہی۔ متنازعہ بنگلہ دیشی مصنف تسلیمہ نسرین نے کہا کہ ایسی تحدیدات مصنف کیلئے ’’حقیقی موت‘‘ سے کم نہیں ہے۔ ایک سال قبل ان کی تصنیف نرباسن کو کتاب میلہ میں شامل کرنے سے انکار کردیا گیا تھا۔ انہوں نے اپنا احساس ظاہر کیا کہ مغربی بنگال میں کچھ بھی نہیں بدلا اور انہیں کولکتہ واپس آنے کی اب کوئی امید نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ مغربی بنگال کی حالت بنگلہ دیش کی مانند ہے۔ بنگال کی حکومت نے انہیں ناگوار شخصیت بنادیا ہے، جسے بنگال میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دی جاسکتی ۔

ان کی کتابوں اور ٹی وی ڈرامہ سیریلس پر امتناع عائد کردیا گیا ۔ جاریہ کولکتہ کتاب میلہ میں شرکت کی اجازت نہیں دی گئی۔ ایسا سی پی ایم کے دور اقتدار میں بھی ہوا تھا اور ممتا بنرجی کے برسر اقتدار آنے کے بعد ان کا خیال تھا کہ صورتحال تبدیل ہوجائے گی لیکن ایسا نہیں ہوا۔ کولکتہ کتاب میلہ میں ان کی تصنیف ’’نشدوہ‘‘ پر امتناع عائد ہونے کا اندیشہ ہے اور انہیں یقین ہے کہ 9 فروری کو کتاب میلہ کے اختتام تک یہ تصنیف وہاں موجود رہیں گی۔

TOPPOPULARRECENT