Saturday , December 16 2017
Home / ہندوستان / تسلیمہ نسرین کے خلاف تحت کی عدالت کا فیصلہ کالعدم ، پٹنہ ہائیکورٹ

تسلیمہ نسرین کے خلاف تحت کی عدالت کا فیصلہ کالعدم ، پٹنہ ہائیکورٹ

پٹنہ ۔ 13 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) پٹنہ ہائیکورٹ نے ایک تحت کی عدالت کی طرف سے چھ سال قبل جاری کردہ اس حکم کو آج کالعدم کردیا جس میں اس عدالت نے بنگلہ دیش کی ملعون و متنازعہ مصنف تسلیمہ نسرین کی جانب سے اپنے ایک ٹوئیٹ سے مبینہ طور پر مذہبی جذبات مجروح ہونے کی شکایت کا نوٹ لیا گیا تھا۔ جسٹس ارون کمار نے کہا کہ مصنفہ کا ٹوئیٹ نہ تو شرانگیز ہے اور نہ ہی یہ امن عامہ کو بگاڑنے کے دانستہ ارادہ سے کیا گیا ہے۔ تسلیمہ نسرین کی طرف سے مغربی چمپارن ضلع کی بٹھیہ عدالت کے چیف جوڈیشیل مجسٹریٹ کے فیصلہ کو چیلنج کرتے ہوئے پٹنہ ہائیکورٹ میں یہ درخواست دائر کی تھی۔ جسٹس ارون کمار نے تحت کی عدالت کے حکم کو کالعدم کرتے ہوئے اپنے فیصلہ میں کہاکہ چیف جوڈیشیل مجسٹریٹ کی عدالت نے فوجداری ضابطہ کی دفعہ 202 کے تحت لازمی تحقیقات کے بغیر ہی اس مسئلہ کا نوٹ لے لیا۔ تسلیمہ کا یہ ٹوئیٹ ایک مقامی ہندی اخبار میں 2011ء کے دوران شائع ہوا تھا جو مسلم خواتین کے بارے میں تھا۔

TOPPOPULARRECENT