Wednesday , December 12 2018

تشکیل تلنگانہ سونیا گاندھی کا عظیم کارنامہ

حیدرآباد /18 فروری (سیاست نیوز) کانگریس قائدین نے علحدہ تلنگانہ ریاست کی تشکیل کو سونیا گاندھی کا کارنامہ قرار دیا۔ آج احاطۂ اسمبلی میں ڈپٹی فلور لیڈر کانگریس قانون ساز اسمبلی ٹی جیون ریڈی اور کانگریس رکن اسمبلی ڈی کے ارونا نے علحدہ علحدہ پریس کانفرنس میں ٹی آر ایس حکومت اور چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا۔

حیدرآباد /18 فروری (سیاست نیوز) کانگریس قائدین نے علحدہ تلنگانہ ریاست کی تشکیل کو سونیا گاندھی کا کارنامہ قرار دیا۔ آج احاطۂ اسمبلی میں ڈپٹی فلور لیڈر کانگریس قانون ساز اسمبلی ٹی جیون ریڈی اور کانگریس رکن اسمبلی ڈی کے ارونا نے علحدہ علحدہ پریس کانفرنس میں ٹی آر ایس حکومت اور چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا۔ مسز ارونا نے کہا کہ تلنگانہ کی 60 سالہ تحریک اور نوجوانوں و طلبہ کی قربانیوں کو دیکھ کر کانگریس نے وعدہ کے مطابق علحدہ تلنگانہ ریاست تشکیل دی، لیکن چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ اپنے انتخابی منشور کے وعدوں پر پانی پھیر دیا۔ انھوں نے کہا کہ ٹی آر ایس اپنے اقتدار کے 8 ماہ مکمل کرچکی ہے، لیکن عوامی فلاح و بہبود کے اقدامات میں پوری طرح ناکام ہے اور کانگریس کا انتخابی نعرہ ’’سنہرا تلنگانہ‘‘ کا اغوا کرلیا۔ انھوں نے کہا کہ ٹی آر ایس حکومت کی کار کردگی سے سماج کا کوئی طبقہ خوش نہیں ہے۔ دریں اثناء ٹی جیون ریڈی نے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ اور چیف منسٹر مہاراشٹرا دیویندر فڈنویس کی ملاقات اور دریائے گوداوری سے تلنگانہ کے لئے 160 ٹی ایم سی پانی کے استعمال سے اتفاق پر شک ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ چیف منسٹر تلنگانہ اس معاہدہ کی وضاحت کرکے عوام میں پائی جانے والی بے چینی کو دور کریں۔ انھوں نے کہا کہ کانگریس زیر قیادت یو پی اے حکومت نے پرانہیتا چیوڑلہ کو قومی پراجکٹ قرار دینے سے اتفاق کیا تھا، جب کہ چندر شیکھر راؤ نے فڈنویس سے ملاقات کے دوران اس پلان پر دوبارہ غور کرنے سے اتفاق کیا ہے، لہذا چیف منسٹر تلنگانہ کو چاہئے کہ اس نظرثانی کی تلنگانہ عوام کے سامنے وضاحت کریں۔

TOPPOPULARRECENT