Tuesday , September 25 2018
Home / شہر کی خبریں / تعلیمی نصاب میں ہندو مذہبی کتابوں کی شمولیت کیخلاف جدوجہد

تعلیمی نصاب میں ہندو مذہبی کتابوں کی شمولیت کیخلاف جدوجہد

سیکولر طاقتوں کے اتحاد کی ضرورت، صدر اے آئی ایس ایف ولی اللہ قادری

سیکولر طاقتوں کے اتحاد کی ضرورت، صدر اے آئی ایس ایف ولی اللہ قادری
حیدرآباد۔16اگست(سیاست نیوز) ملک کے تعلیمی نظام میں بڑھتی فرقہ پرستی کے خلاف کل ہند اسٹوڈنٹ فیڈریشن کی جانب سے چندی گڑھ میں منعقد ہونے والے تین روزہ قومی سمینار کی تفصیلات سے واقف کرواتے ہوئے اے آئی ایس ایف کے قومی صدر ولی اللہ قادری نے کہاکہ جسٹس اے آر داوے نے تعلیمی نصاب میںمہابھارت‘ رامائن اور بھگوت گیتا کو شامل کرنے کی مرکزی حکومت سے اپیل کرکے تعلیم کو فرقہ وارانہ رنگ دینے کی جو کوشش کی ہے اس کے خلاف سکیولر طاقتوں کو متحرک ہونے کی سخت ضرورت ہے۔آج یہاں اے آئی ایس ایف گریٹر حیدرآباد کے دفتر میںمنعقدہ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ نریندر مودی حکومت کے اقتدار میںآنے کے بعد قومی سطح پر جو حالات پیش آرہے ہیں اس سے صاف ظاہر ہے کہ مودی انتظامیہ میں فرقہ پرست طاقتوں کو کھلی چھوٹ ملی ہے۔انہوں نے کہاکہ 26,27,28کو چندی گڑ میںمنعقد ہونے والے اس سمینار کا مقصدہی ملک کے تعلیمی نصاب میںفرقہ پرستی کے داخلے کو روکنا ہے اور ہر شہر کو مفت طبی سہولتوں کی فراہمی اور حق روزگار اسکیم کوبھگت سنگھ روزگار یوجنا سے موسوم کرنے کے لئے نمائندگی کی حکمت عملی ہے۔سید ولی اللہ قادری نے فرقہ پرستوں کے ہاتھوں پونے میںپیش آئے مسلم نوجوان‘ اڑیسہ اور بنارس ہندویونیورسٹی میں اے آئی ایس ایف قائد ین کے قتل کو بھی فرقہ پرست طاقتوں کی پس پردہ سازش کا حصہ قراردیا ۔اس موقع پر پریس کانفرنس میںفیڈریشن کے ریاستی قائدین اسٹالن‘ وینو اور پروین بھی موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT