Sunday , December 17 2017
Home / شہر کی خبریں / تعلیمی نظام میں اصلاحات ، گریڈنگ سسٹم متعارف کرنے کی تجویز

تعلیمی نظام میں اصلاحات ، گریڈنگ سسٹم متعارف کرنے کی تجویز

آئندہ تعلیمی سال سے عمل ، والدین و اسکول انتظامیہ کا اجلاس ، سکریٹری محکمہ تعلیمات کا خطاب
حیدرآباد ۔ 18 ۔ اکٹوبر : ( سیاست نیوز ) : آئندہ تعلیمی سال سے امتحانات میں نمبرات کے لیے گریڈنگ نظام پر عمل کیا جائے گا ۔ جس کا مقصد طلبہ پر تعلیمی و ذہنی تناؤ کو کم کرنا ہے ۔ اس بات کا اعلان چیف سکریٹری محکمہ تعلیمات راجیو آچاریہ نے کیا ۔ خانگی کالجس میں طلبہ کی خود کشیوں میں اضافہ کے پیش نظر کالجس کے انتظامیہ اور طلبہ اور والدین کی تنظیموں کے ساتھ ایک اجلاس منعقد کرنے کے بعد وہ انٹر بورڈ سکریٹری اشوک کے ساتھ منعقدہ پریس کانفرنس میں یہ بات بتائی ۔ انہوں نے اس موقع پر مزید کہا کہ طلبہ کی خود کشیوں کی وجہ صرف تعلیمی دباؤ ہی نہیں بلکہ والدین کی جانب سے اولاد کے ساتھ حد سے زیادہ امیدیں وابستہ کرنا ، زائد اوقات میں کلاسیس چلانا اور دیگر کئی وجوہات کی بناء طلبہ خود کشی کررہے ہیں ۔ محترمہ نے مزید کہا کہ یس یس سی نتائج کے مانند انٹر میں بھی گریڈنگ سسٹم کی اولیائے طلبہ نے وکالت کی ہے اور اس مناسبت سے باریکی کے ساتھ غور کیا جارہا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ اولیائے طلبہ کا خیال ہے کہ گریڈنگ سسٹم کی وجہ سے طلبہ آپس میں ایک دوسرے کے ساتھ خود کا موازنہ اور کالجس کے اعلیٰ نتائج کے حصول کی دوڑ سے باہر آسکتے ہیں اور گریڈنگ سسٹم طلبہ کے لیے درست ہوگا ۔ اور چند مضامین میں اسباق زیادہ ہیں ان میں کمی کی بھی کوشش کی جائے گی ۔ انہوں نے مزید کہا کہ خانگی کالجس اپنے پی آر اوز کے ذریعہ آئی آئی ٹی ، جے ای ای اور نیٹ کے نام پر اولیائے طلبہ پر اثر انداز ہورہے ہیں اور اعلیٰ نشانات کے نام پر میڈیا میں بڑے بڑے اشتہارات کے ذریعہ بھی اثر انداز ہورہے ہیں اور اس معاملہ میں بھی اولیائے طلبہ کی جانب سے اصول و قواعد مرتب کرنے کا مطالبہ کیا ہے ۔ لہذا اس مسئلہ پر بھی غور و خوص کیا جارہا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ مختلف امور سے متعلق کالجس کو احکامات جاری کئے جائیں گے ۔ انٹر بورڈ سکریٹری اشوک نے کہا کہ طلبہ کی جانب سے خود کشی کے واقعات پیش آنے پر حقوق انسانی تنظیموں کی جانب سے ہمیں نوٹسیں وصول ہورہی ہیں ۔ اسی لیے ہم ان خود کشیوں کو روکنے کے اقدامات پر غور و خوص کررہے ہیں ۔ ہر ایک کالج میں سیکالوجسٹ کا تقرر کرنا ہوگا جسے روزانہ دو گھنٹے کالج میں خدمات انجام دینا ہوگا اور طالبات کی کالجس میں خاتون سیکالوجسٹ کا تقرر کرنا ہوگا ۔
l خصوصی کمیٹیوں کے ذریعہ کالجس میں اچانک تنقیح کی جائے گی اور تاحال دارالاقامہ کس کی نگرانی میں ہیں واضح نہیں تھا مگر انہیں انٹر بورڈ کی نگرانی میں لیا جائے گا ۔
l انٹر بورڈ تعلیمی کیلنڈر کے مطابق ہی کلاسیس چلائی جائیں گی ۔ حالات کے تحت کیلنڈر میں مناسب تبدیلیوں کے ساتھ کلاسیس صبح 9-30 سے شام 4-30 بجے تک ہی چلائی جائیں گی اور اتوار کے دنوں میں کسی بھی صورت کلاسیس چلائی نہیں جائیں گی ۔۔
l روزانہ کم از کم ایک گھنٹہ کھیل کود کے لیے مختص کیا جائے گا اس بات سے کالجس کے انتظامیہ نے بھی اتفاق کیا ۔
l صرف میڈیکل اور انجینئرنگ کے طلبہ کا ہی مستقبل روشن ہے ۔ اس واہمہ کو ختم کرنے کے لیے دیگر کورسیس سے متعلق ریاستی سطح پر شعور آگاہی پروگرامس منعقد کئے جائیں گے ۔
l صبح کے اولین اوقات 4-30 بجے تا رات 11 بجے تک طلبہ کو تعلیم میں مصروف رکھنے کی وجہ سے طلبہ ذہنی تناؤ کا شکار ہورہے ہیں اور طلبہ کو آرام کے لیے صرف 4 ۔ 5 گھنٹے ہی وقت دستیاب ہورہا ہے ۔۔
l کھیل کود اور گیمس کا انعقاد بالکل عمل میں نہیں لایا جارہا ہے ۔
l کلاس رومس کشادگی اور روشنی و خوشگوار فضا سے محروم ہیں ۔
l ہاسٹلس کے کمروں میں گنجائش سے زائد طلبہ کو رکھا جارہاہے ۔
l طلبہ کی تعداد کی مناسبت سے بیت الخلاء اور حمام نہ ہونے کی وجہ سے طلبہ رات کے اوقات میں ضروریات اور غسل سے فراغت حاصل کرنے پر مجبور ہیں ۔۔
ٹیچرس کے تقررات امتحان کی تیاری
حیدرآباد ۔ 18 ۔ اکٹوبر : ( سیاست نیوز ) : ٹیچرس کے تقررات اس مرتبہ ٹی ایس پی ایس سی کے تحت ہونے والے ہیں اور پریلمنری امتحان میں جنرل نالج اور تلنگانہ کی معلومات کے سوالات ہوں گے ۔ اس ضمن میں بی ایڈ ، ڈی ایڈ اور لینگویج پنڈت امیدواروں کے لیے امتحان کی تیاری کیسے کریں ۔ پروگرام اتوار 21 اکٹوبر کو 11 بجے صبح محبوب حسین جگر ہال احاطہ سیاست عابڈس پر مقرر ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT